فارن فنڈنگ کیس خ مریم صفدر اور بلاول زرداری کو تلاشی دینا پڑے گی، بھاگنے نہیں دیں گے،فرخ حبیب

پارٹی اکائونٹس میں بھی پاپڑ والے، فالودے والے کردارسامنے آئیں گے، الیکشن کمیشن جے یوآئی سمیت تمام پارٹیوں سے اکائونٹس کا حساب لے، وزیر مملکت

بدھ 20 اکتوبر 2021 14:41

فارن فنڈنگ کیس خ مریم صفدر اور بلاول زرداری کو تلاشی دینا پڑے گی، بھاگنے نہیں دیں گے،فرخ حبیب
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 20 اکتوبر2021ء) وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب نے ایک بار پھر واضح کیا ہے کہ فارن فنڈنگ کے حوالے سے مریم صفدر اور بلاول زرداری کو تلاشی دینا پڑے گی، اس دفعہ بھاگنے نہیں دیں گے،پارٹی اکائونٹس میں بھی پاپڑ والے، فالودے والے کردارسامنے آئیں گے، الیکشن کمیشن جے یوآئی سمیت تمام پارٹیوں سے اکائونٹس کا حساب لے۔

بدھ کو الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے وزیر مملکت فرخ حبیب نے کہا کہ مریم صفدر اور بلاول زرداری نہ قانون کو مانتے ہیں اور نہ ہی آئین کو، ادارے ان کے خلاف قانونی کارروائی کریں تو یہ حملہ آور ہوتے ہیں، تاریخ گواہ ہے کہ یہ لوگ سپریم کورٹ، نیب پر حملہ آور ہوئے، ججز کے خلاف تنقید ان کا وطیرہ ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی سکروٹنی کمیٹی نے ایک سب کمیٹی قائم کی ہے جس کا 25 اکتوبر کو اجلاس ہوگا، ہمارے فنانشل ایکسپرٹ اور چارٹر اکائونٹ 8 دن پیپلز پارٹی اور پھر 8 دن ،ن لیگ کے اکائونٹس کی جانچ پڑتال کریں گے،یومیہ کی بنیاد پر جانچ پڑتال کی اپ ڈیٹ قوم کے سامنے رکھتے رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مریم صفدر کو چیلنج ہے کہ اب انھیں راہ فرار اختیار نہیں کرنے دیں گے، مریم جسٹس ریٹائرڈ قیوم کے فون والے انصاف کی منتظر ہیں،جب بھی ان سے سوال ہو رونا دھونا شروع کر دیتی ہیں، قوم سوال کررہی ہے کہ ان کے اکائونٹس میں پیسے ڈالنے والے کونسے فرشتے ہیں، 4 سال سے انہوں نے کروڑوں روپے بھجوانے والوں کے نام نہیں بتائے۔ وزیر مملکت فرخ حبیب نے کہا کہ پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی پیروی بھر پور طریقے سے جاری رکھے گی، مریم اور بلاول اپنی رسیدیں دیں،دوبارہ قطری خط یا جعلی ٹرسٹ ڈیڈ نہ لے آئیے گا،اصل کہانی اکائونٹس کی جانچ پڑتال کے بعد سامنے آنی ہے کہ کیسے پارٹی اکائونٹس کو منی لانڈرنگ کے لئے استعمال کیا گیا، پارٹی اکائونٹس میں بھی پاپڑ والے، فالودے والے کردارسامنے آئیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے پولیٹکل فنڈ ریزنگ متعارف کرائی، دونوں جماعتوں کو مشورہ ہے کہ رسیدیں نہ چھپائیں اس کے علاوہ اور کوئی راستہ نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے سکروٹنی کمیٹی میں پیش کیے گئے ریکارڈ کے مطابق دونوں پارٹیوں کے اکائونٹس سامنے آئے ہیں جو گوشواروں میں ظاہر نہیں،پارٹی فنڈز کس طرح استعمال ہوئے اس کا فیصلہ الیکشن کمیشن نے کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ ن لیگ اور پی پی پی امریکا اور برطانیہ میں لمیٹیڈ کمپنیوں کے طور پر رجسٹرڈ ہیں۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments