شرائط سخت ہونے پر ٹی ٹی پی سے مذاکرات آگے نہیں بڑھ سکے ، وزیر داخلہ

ٹی ٹی پی کی شرائط قبول نہیں کی جاسکتیں ، اگر وہ لڑیں گے تو ان سے لڑا جائے گا۔ شیخ رشید احمد نے واضح کردیا

Sajid Ali ساجد علی اتوار 23 جنوری 2022 09:46

شرائط سخت ہونے پر ٹی ٹی پی سے مذاکرات آگے نہیں بڑھ سکے ، وزیر داخلہ
اسلام آباد ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 23 جنوری 2022ء ) وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کی شرائط اس قدر سخت تھیں کہ ان سے مذاکرات آگے نہ بڑھ سکے اور انہوں نے خود سیز فائر کی خلاف ورزی کی ، ٹی ٹی پی کی شرائط قبول نہیں کی جاسکتی ہیں ، اگر وہ لڑیں گے تو ان سے لڑا جائے گا۔ پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان بن چکا ہے اور ملک میں ایسے ادارے موجود ہیں جو تمام چیزوں پر نظر رکھے ہوئے ہیں ، افواج ، سویلین اور اینٹلی جنس اداروں نے ہزاروں جانوں کی قربانی دے کردہشت گردوں کوشکست دی ، ٹی ٹی پی کے خلاف بھی فورسز کو کامیابی حاصل ہورہی ہے ، صرف چند گروپ اِکا دُکا وارداتیں کررہے ہیں ، اسلام آباد میں مارے گئے 2 دہشت گردوں کا ٹی ٹی پی نے بھی اعتراف کیا ، داعش سے بات نہیں ہوئی اور بی این اے ایک چھوٹا سا گروپ ہے۔

(جاری ہے)

ملکی سیاست پر گفتگو میں اشیخ رشید احمد نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو حلف اٹھائے چند دن ہوئے تھے تو اپوزیشن نے ان کی جانے کی باتیں کرنا شروع کردیں ، عمران خان کہیں نہیں جا رہے ہیں ، اپوزیشن نے ٹریکٹر ٹرالی نہیں بلکہ ریڑھا ریڑھی نکالی ہے ، اگر اپوزیشن نے کوئی ایسی غلطی کی کہ جس سے جمہوری نقصان ہوا تو یہ ان کا نقصان ہوگا ، ایمرجنسی اور صدارتی نظام کا شور ہے اور ابھی تک یہ کابینہ میں زیر بحث نہیں آیا ، عمران خان کی خوش نصیبی ہے جو تھکی ہوئی اپوزیشن ملی ، اللہ کو منظور ہوا تو عمران خان پانچ سال پورے کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن اپنی ریلی 23 مارچ سے 4 دن پہلے یا 4 دن بعد کرلے کیوں کہ 23 مارچ کو اوآئی سی کے لیڈرزپاکستان آرہے ہیں، 21 اور 22 مارچ سے اسلام آباد کی بعض سڑکیں بند ہوجائیں گی، 23 مارچ کی پریڈ میں او آئی سی کے لیڈرزبھی شریک ہوں گے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments