ٹ* کرپشن کے خاتمے کا وعدہ پہلے 90 دن میں ختم کر دیا تھا، عمران خان

۹موجودہ دور حکومت میں کوئی مالی سکینڈل سامنے نہیں آیا، کوئی بڑا واقعہ رونما نہ ہوا تو معیشت مزید بہتر ہو گی شہباز شریف کے کرپشن کیسز اور منی لانڈرنگ کے معاملات کو مزید اجاگر کیا جائے ، عوام کو بہترین معاشی اشارے بارے آگاہ کیا ،بین الاقوامی اداروں کی معیشت بارے رپورٹوں کو بھی بتایا جائے ، وزیر اعظم کی زیر صدارت پارٹی و حکومتی ترجمانوں کا اجلاس

بدھ 26 جنوری 2022 18:50

ی*اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 26 جنوری2022ء) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کرپشن کے خاتمے کا وعدہ پہلے 90 دن میں ختم کر دیا تھا، موجودہ دور حکومت میں کوئی مالی سکینڈل سامنے نہیں آیا، کوئی بڑا واقعہ رونما نہ ہوا تو معیشت مزید بہتر ہو گی، شہباز شریف کے کرپشن کیسز اور منی لانڈرنگ کے معاملات کو مزید اجاگر کیا جائے ، عوام کو بہترین معاشی اشارے بارے آگاہ کیا ،بین الاقوامی اداروں کی معیشت بارے رپورٹوں کو بھی بتایا جائے ۔

وزیر اعظم کی زیر صدارت پارٹی و حکومتی ترجمانوں کا اجلاس منعقد ہوا ۔ ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیراعظم نے ٹرانسپرنسی رپورٹ، صحت کارڈ اور شہباز شریف کیخلاف کرپشن کیسز پر بات کی۔ ٹرانسپرنسی رپورٹ کے بارے میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے اجلاس کو بریفنگ دی ۔

(جاری ہے)

فواد چوہدری نے بتایا کہ ٹرانسپرنسی رپورٹ میں مالی کرپشن کا کوئی ذکر نہیں ہے۔

صرف قانون کی حکمرانی سے متعلقہ معاملات کو ہائی لائٹ کیا گیا ہے ۔ وزیراعظم کا اس موقع پر کہناتھا کہ کرپشن کے خاتمے کا وعدہ پہلے 90 دن میں ختم کر دیا تھا،موجودہ دور حکومت میں کوئی مالی سکینڈل سامنے نہیں آیا ۔سابقہ ادوار میں پانامہ جیسے بڑے بڑے سکینڈل سامنے آتے رہے ۔وزیراعظم نے ترجمانوں کو ہدایت کی کہ شہباز شریف کے کرپشن کیسز اور منی لانڈرنگ کے معاملات کو مزید اجاگر کیا جائے ۔

عوام کو بتایا جائے کہ شریف خاندان نے کس طرح چپڑاسیوں اور کلرکوں کے نام پر منی لانڈرنگ کی ۔ترجمانوں کو صحت کارڈ جیسی بڑی سہولت بارے عوام کو آگاہ کرنا کی ہدایت کی گئی ۔وزیر اعظم نے کہا عوام کو بہترین معاشی اشارے بارے آگاہ کیا ۔ بین الاقوامی اداروں کی معیشت بارے رپورٹوں کو بھی بتایا جائے ۔ انہوں نے کہا کوئی بڑا واقعہ رونما نہ ہوا تو معیشت مزید بہتر ہو گی۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments