امارات نے کچرے سے بجلی پیدا کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا پلانٹ لگانے کا اعلان کر دیا

متحدہ عرب امارات کامملکت میں پیدا ہونے والے کچرے کو ضائع کرنے کے بجائے، اس کے بہتر استعمال کا فیصلہ ، اماراتی حکومت 1.1ارب ڈالر کی لاگت سے کچرے سے بجلی پیدا کرنے والا پلانٹ لگائے گی، بین الاقوامی میڈیا رپورٹ

Danish Ahmad Ansari دانش احمد انصاری اتوار 1 اگست 2021 21:09

امارات نے کچرے سے بجلی پیدا کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا پلانٹ لگانے ..
دبئی (اُردو پوائنٹ، اخبار تازہ ترین، یکم اگست 2021) چین کی جانب سے کچرا درآمدکرنے سے انکار کے بعد متحدہ عرب امارات کا بڑا فیصلہ، امارات نے اربوں ڈالرز کی لاگت سے کچرے سے بجلی پیدا کرنےو الا دنیا کا سب سے بڑا پلانٹ لگانے کا اعلان کر دیا۔ بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات نے مملکت میں پیدا ہونے والے کچرے کو ضائع کرنے کے بجائے، اس کے بہتر استعمال کا فیصلہ کیا ہے۔

امارات کی حکومت نے 1.1ارب ڈالر کی لاگت سے کچرے سے بجلی پیدا کرنے والا دنیا کے سب سے بڑے پلانٹس میں سے ایک بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اماراتی حکومت نے یہ فیصلہ چین کی جانب سے کچرا درآمد نہ کرنے کے فیصلے کے بعد کیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق چین کی جانب سے دوسرے ممالک سے کچرا درآمد کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

(جاری ہے)

چین کی جانب یہ فیصلہ اہم معاشی اقدامات کے سلسلے میں کیا گیا ہے۔

متحدہ عرب امارات یہ پلانٹ دبئی میں تعمیر کر رہا ہے، جبکہ اسی طرح کا ایک چھوٹا پلانٹ شارجہ میں رواں برس کام شروع کر دے گا۔ علاوہ ازیں ابوظہبی میں اِس طرح کے دو مختلف منصوبوں پر کام کیا جا رہا ہے، جس کے بعد متحدہ عرب امارات مملکت میں پیدا ہونے والے کچرے کے2تہائی حصے کو خود سے توانائی میں بدلنے کے قابل ہو جائے گا۔ تاہم اس منصوبے سے متحدہ عرب امارات کو ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے2050 کے منصوبے پر عمل پیرہ ہونے میں دقت پیش آ سکتی ہے، جس کے مطابق دنیا بھر میں ترقی یافتہ اور ترقی پذیر ممالک ماحول میں کاربن ڈائی آکسائیڈ اور ماحول کیلئے دیگر مضر گیسز کو کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ متحدہ عرب امارات کے پاس مملکت میں ایک ایسا نظام بھی موجود ہے کہ جس کے تحت کچرے میں موجود اشیا کو دوبارہ کام کے لائک بنایا جا سکتا ہے، تاہم اِن چیزوں کو نکال لینے کے باوجود بھی کچرے کا ایک بڑا ڈھیر بچ جاتا ہے، جسے توانائی پیدا کرنے کیلئے استعمال میں لایا جائے گا۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments