اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںصحافیوں کیلئے ہائی اویئر منصوبہ کے زیر اہتمام موسمی تغیرات کے پیش نظر ..

صحافیوں کیلئے ہائی اویئر منصوبہ کے زیر اہتمام موسمی تغیرات کے پیش نظر نئی ٹیکنالوجی پر عملدرآمد کی سائٹ کا دورے کا اہتمام

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 اپریل2018ء) پی اے آر سی کی جانب سے الیکٹرنک اور پرنٹ میڈیا کے نمائندگان کیلئے ہائی اویئر منصوبہ کے زیر اہتمام موسمی تغیرات کے پیش نظر نئی ٹیکنالوجی پر عملدرآمد کی سائٹ سوروبا چکری کے معلوماتی دورے کا اہتمام کیا گیا۔ ہمالین ہائی اویئر منصوبہ کے زیر اہتمام پاکستان، بنگلہ دیش، بھارت، نیپال کے غریب اور سیلاب زدہ علاقوں، پہاڑی علاقوں اور اپر گنگا ،گنداکی اور ٹیسٹا ریور کے رہائشیوں کیلئے موسمی تغیرات سے نمٹنے اور جدید طریقوں کو اپنانے کیلئے معلومات اور مدد فراہم کی جاتی ہے۔

اس دورے کا انعقاد پی اے آر سی کی جانب سے کیا گیا جس میں الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے علاوہ اعلیٰ پالیسی میکرز، تعلیمی اداروں کے سربراہان اور اہم پارلیمنٹیرین شامل ہوئے۔

(خبر جاری ہے)

اس سائٹ پر موسمی تغیرات کے حوالے سے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال اور انڈس بیسن کے رہائشی کسانو ں کیلئے زراعت کے نئے طریقوں سے واقفیت کے حوالے سے بہت کام کیا گیا ہے۔

اس سائٹ کے مقصد کسان برادری کے لیے موسمی تغیرات کے پیش نظر زراعت کے جدید طریقوں کو اپنانے سے متعلق علوم سکھائے جاتے ہیں اور تربیت بھی فراہم کی جائے گی۔ یہ سائٹ کسانوں اور زراعت سے متعلقہ افراد کے لیے معلوماتی اور نت نئے طریقے سیکھنے کے لحاظ سے اہم ترین ہے۔ اس طرح کے منصوبہ جات کو کامیابی کے بعد ملک کے دیگر علاقوں میں بھی عام کیا جائے گا۔

اس موقع پر ہائی اویئر ٹیم کے ممبران نے مہمانان کو اس سائٹ پر نصب شدہ نئے آلات اور طریقوں کے بارے میں بریف کیا۔ ڈائریکٹر جنرل این اے آر سی ڈاکٹر غلام محمد علی نے مہمانان کو خوش آمدید کہا اور کہا کہ موسمی تغیرات ایک اہم نوعیت کا مسئلہ ہے اور اسکے اثرات کی کوئی حدود نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی اے آر سی ملک میں کسانوں کی تربیت کے حوالے سے اہم اقدامات اُٹھا رہی ہے تا کہ ملک میں موسمی تغیرات کے اثرات سے بچا جا سکے اور ملکی زراعت کی پیداوار متاثر نہ ہو۔

ڈاکٹر منیر احمد نے بھی میڈیا کے تمام معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ میڈیا کے نمائندے پی اے آر سی کے زیر اہتمام ہونے والی زرعی تحقیقی سرگرمیوں کو اجاگر کرنے میں مدد دیں تا کہ پی اے آر سی کی تحقیق عام کسان تک پہنچ سکے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں