اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس کی سماعت جمعرات تک ملتوی کر دی

منگل اپریل 21:33

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 اپریل2018ء) اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس کی سماعت جمعرات تک ملتوی کر دی ہے ۔پیر کو جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل ڈویژن بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ فاضل جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ جج کی جانب سے رشوت لینے کے اعتراف کے بعد ٹرائل کورٹ کے فیصلہ کی کیا حیثیت ہے، سپریم کورٹ کے گیارہ رکنی بنچ کے فیصلے کے مطابق تعصب کے معمولی شبے کی صورت میں بھی تمام کارروائی بے حیثیت رہ جاتی ہے۔

عدالت نے حکم دیا کہ ایگزیکٹ کے وکیل سپریم کورٹ کے مذکورہ فیصلے کی روشنی میں اپنا موقف پیش کریں، بریت کی اپیل مسترد ہونے کی صورت میں بھی ٹرائل کے متعصب ہونے کے حوالے عدالت کو مطمئن کریں۔ جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ ایف آئی اے کے وکیل بتائیں کہ یہ کیس کس طرح ان کے دائرہ کار میں آتا ہے ۔

(جاری ہے)

سماعت کے دوران ایگزیکٹ کے وکیل راجہ رضوان عباسی نے موقف اختیار کیا کہ جج کے اعتراف کی صورت میں بھی ٹرائل کا متعصب ہونا ثابت نہیں ہوتا، تمام ٹرائل ایف آئی اے کے ڈپٹی ڈائریکٹر کے سامنے ہوا، ٹرائل جج نے برطرفی کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کر رکھی ہے، اس اپیل کا فیصلہ ہونے تک اس معاملے کو زیر التوا رکھنا چاہیے، ہم نے سپریم کورٹ میں اس حوالے سے جے آئی ٹی بنانے کے لیے درخواست بھی دائر کر رکھی ہے ۔

بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت جمعرات تک ملتوی کر دی۔

متعلقہ عنوان :

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments