م*عمران صاحب آپ کی60کروڑ کے اثاثے اربوں روپے مالیت کے کیسے ہو گئی ،مریم اورنگزیب ھ*غریبوں کے پیسوں سے عمران خان، جہانگیر ترین، علیمہ باجی اور انیل مسرت کے گھر بنیں گے ذ*گھروں کے نام پر غریب ایک روپیہ نہ دیں، قوم کوخبردار کررہی ہوں کہ گھروں کے نام پر قوم سے تاریخی فراڈ ہونے جارہا ہے،قوم کو نہیں بتایا کہ گھر کب شروع ہونگی کب مکمل ہوں گی ،وزیر اعظم کے خطاب پر ردعمل

اتوار اپریل 20:01

Qاسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 21 اپریل2019ء) مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عمران صاحب آپ کی60کروڑ کے اثاثے اربوں روپے مالیت کے کیسے ہو گئی غریبوں کے پیسوں سے عمران خان، جہانگیر ترین، علیمہ باجی اور انیل مسرت کے گھر بنیں گے،گھروں کے نام پر غریب ایک روپیہ نہ دیں، قوم کوخبردار کررہی ہوں کہ گھروں کے نام پر قوم سے تاریخی فراڈ ہونے جارہا ہے،قوم کو نہیں بتایا کہ گھر کب شروع ہونگی کب مکمل ہوں گی ۔

وزیر اعظم عمران خان کے کوئٹہ میں خطاب پر ردعمل دیتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ یہ حکومت کھڑے ہونے سے پہلے ہی گری ہوئی حکومت تھی،آپ کی حکومت ہر لحاظ سے گری ہوئی حکومت ہے،آپ کان کھول کر سن لیں کہ آپ کی حکومت اس قابل نہیں کہ اسے گرایاجائے آپ میچ اسلئے ہار رہے ہیں کہ آپ نالائق ہیں، دوسری ٹیم آپ سے بہتر اورلائق تھی،یہ کیسا کپتان ہے جو کہتا ہے مخالف ٹیم کی وجہ سے میں میچ ہار گیا ہوںعمران صاحب علیمہ باجی،جہانگیر ترین اور اپنے دائیں بائیں لوٹ مار کرنیوالوں کا شاید ذکر کر رہے تھے شہیدوں کا ذکر نہ کرکے آپ نے ثابت کیا کہ آپ کو عوام اور انکے درد کا کتنا احساس ہے شہداکے گھر میں کھڑے ہوکرآپ سیاسی انتقام،بغض انااورتکبر سے بھری تقریرکی آپ کے سیاسی انتقام، بغض کایہ عالم ہے کہ کوئٹہ سانحہ کے شہیدوں کاذکرتک نہیںعوام اللہ تعالی سیرو روکے واپس پرانیپاکستان میں جانیکی دعاکررہے ہیںعمران صاحب آپ نے ٹھیک کہا کہ گزشتہ9ماہ سیملک کو بے دردی سے لوٹاجارہاہے گزشتہ9ماہ سے نوجوانوں جس برے حال میں ہیں، اس کی بھی ملکی تاریخ میں مثال نہیں ملتی عمران صاحب آپ کی حکومت میں ساڑھے چار سو ارب ٹیکس ریونیو کا خسارہ ہے آپ کی حکومت کے نوماہ میں مہنگائی دس فیصد ہوگئی ہے عمران صاحب جن کو چور کہہ رہے ہیں اٴْن کی حکومت میں مہنگائی 3 فیصد تھی عمران صاحب آپ جو یومیہ 14 ارب روپے قرضہ لیرہے ہیں وہ کس کی جیب میں جا رہا ہے عمران صاحب کی حکومت کے صرف ۹ مہینوں میں ملکی قرضہ 30ہزارارب ہو گیا ہے ،صحت و تعلیم کے منصوبے لگانیاور دہشتگردی ختم کرنے میں قرضے صرف ہوئے عمران خان صاحب ملکی قرضے 11000 میگاواٹ بجلیاور 1800 کلو میٹر موٹر ویز پر لگے،72 سال میں ملک اتنا نہیں ڈوبا،نقصان نہیں پہنچاجو آپ نی9مہینے میں کیا ہے تقریر کے شروع میں کہاکہ میں بتاؤں گا قرض کیسے ختم ہوگا،پھر اسکا ذکر نہیں کیاآپ اتنے نالائق ہیں کہ9ماہ میں ایک بھی مسئلہ حل تو کیا،کوئی حل بتا بھی نہیں سکے خان صاحب گزشتہ بیس سال سے آپ قوم کو صرف مسائل بتا رہے عمران صاحب ؛لوگوں کو50لاکھ گھر دیں ، ایک کڑوڑ نوکریاں دیںعمران صاحب ڈال دیں سب کو جیلوں میں، لیکن لوگوں کو روٹی دیںچور چور، ڈاکو ڈاکو کا چورن نہیں بک رہا، لوگوں کو روٹی،روزگاراور گھر چاہیے عمران صاحب آپ کی حکومت کھڑی کب ہوئی تھی جو کوئی کوئی گرائے گاعمران صاحب آپ کی زبان، نااہلی اور نالائقی سے آپکی حکومت کبھی کھڑی نہیں ہوسکتی عمران صاحب خالی برتن صرف شور مچا سکتا ہیعمران صاحب آج پھرشہباز شریف کے گھروں کے منصوبے کوبلوچستان تک پہنچانے پر مبارکباد پیش کرتی ہوںآپ کیوں ہر روز ہارے ہوئے شخص جیسی تقریر کرتے ہیں، 21-04-19/--120 #h# ةبہبود آبادی پروگرام کی کامیابی کیلئے منظم آگاہی مہم پر عملدرآمد ہونا چاہئے،میاں آفتاب احمد -آبادی کو کنٹرول میں رکھنے کے لئے خواتین کے ساتھ مردوںمیں بھی شدید احساس پیدا کرنے کی ضرورت ہے،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر فیصل آباد #/h# ا فیصل آباد(آن لائن) بہبود آبادی پروگرام کی کامیابی کے لئے منظم آگاہی مہم پر وسیع انداز میں عملدرآمد ہونا چاہئے ۔

(جاری ہے)

اس سلسلے میں شادی شدہ جوڑوں کو چھوٹے کنبے کی اہمیت سے آگاہ کرنے کے لئے معاشرے کے بااثر طبقات کی معاونت حاصل کی جائے ۔ یہ بات ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ( جنرل ) میاں آفتاب احمد نے ڈسٹرکٹ کوارڈینیشن کمیٹی برائے پاپولیشن ویلفیئر کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی جس میں ایم پی اے فردوس رائے بھی موجود تھیں جبکہ ڈسٹرکٹ پاپولیشن ویلفیئر ظفر اقبال ‘ ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر طیبہ اعظم‘ مذہبی حلقہ سے پیر صدیق الرحمن ‘ محمد حفیظ ‘ سوشل ویلفیئر آفیسر کاشف نثار اور دیگر افسران بھی موجود تھے ۔

صدر اجلاس نے کہا کہ آبادی کو کنٹرول میں رکھنے کے لئے خواتین کے ساتھ مردوںمیں بھی شدید احساس پیدا کرنے کی ضرورت ہے جس کے لئے وسیع آگاہی مہم پرعملدرآمد کویقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ زیادہ آبادی میں والے علاقوںمیںخصوصی پروگرامز منعقد کرکے لوگوںکی ذہنی تربیت کی جائے تاکہ آبادی کو وسائل کے مطابق رکھنے کا پیغام عام ہو ۔ انہوں نے کہا کہ ماں اور بچے کی صحت کو برقرار رکھنے کیلئے بہبود آبادی پروگرامز کو گھر گھر پہنچایا جائے اور اس ڈیوٹی پرمامور سٹاف کی کارکردگی واضح نظر آنی چاہئے ۔

انہوںنے کہا کہ کم بچے خوشحال گھرانہ پروگرام کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کے سلسلے میں افسران کو ٹارگٹس تفویض کرکے کارکردگی کا جائزہ لیا جائے ۔ ایم پی اے فردوس رائے نے بہبود آبادی پروگرام کو کامیاب بنانے کے لئے باقاعدگی سے سیمینارز کے انعقاد اور دور دراز علاقوں میں خواتین کی رہنمائی کے لئے خصوصی اقدامات پرزور دیا ۔ انہوں نے بہبود آبادی پروگرام کے پیغام کی کامیابی کے لئے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔

ڈسٹرکٹ آفیسر نے اجلاس کو محکمانہ کارکردگی اور بہبود آبادی کے آگاہی پروگرام میں وسعت کے لئے دیگر اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا۔ انہوںنے بتایا کہ ٹیچرز ‘ علماء کرام ‘ فیکٹری ورکرز کو پروگرامز میںشامل کیا جارہا ہے جبکہ صحت مندانہ سرگرمیاں بھی بلاتعطل جاری ہیں ۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments