سپریم کورٹ ، نیب آرڈیننس کے سیکشن 17-ڈی کے دائرہ اختیار سے متعلق تمام اپیلیں اور درخواستیں یکجا کرنے کا حکم

منگل اکتوبر 22:28

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 27 اکتوبر2020ء) سپریم کورٹ نے نیب آرڈیننس کے سیکشن 17-ڈی کے دائرہ اختیار سے متعلق کیس کی سماعت کے موقع پرکیس سے متعلقہ تمام اپیلیں اور درخواستیں اکٹھی کرنی کا حکم دے دیا ہے۔ کیس کی سماعت جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں قائم تین رکنی بینچ نے کی۔ دوران سماعت ایڈووکیٹ طارق محمود نے دلائل دیتے ہوئے موقف اپنایا کہ ہمیں دیکھنا ہوگا کہ قانون بناتے وقت قانون سازوں کے ذہن میں کیا بات تھی،نیب قانون کے تحت زیادہ سے زیادہ سزا 14 سال ہو سکتی ہے،اگر کسی ملزم کے خلاف پانچ ریفرنس ہیں تو کیا اسے ہر کیس میں 14/14 سال الگ الگ جیل کاٹنی پڑے گی اگر ایسا ہوتا ہے تو یہ ملزم کے ساتھ ناانصافی ہوگی،نواز شریف کیس کا حوالہ دیا جاتا ہے لیکن اس وقت عدالت نے تین ریفرنس دائر کرنے حکم دیا تھا، نیب قانون کے سیکشن 17-ڈی کے دائرہ اختیار کا تعین ہونا چاہیے۔

(جاری ہے)

جسٹس مظاہر علی نقوی نے کہا کہ معاملہ سپریم کورٹ کا سات رکنی بینچ دیکھ رہا ہے۔نیب پراسیکیوٹر نے کیس سے متعلقہ دیگر اپیلیں اور درخواستیں مذکورہ کیس کے ساتھ اکٹھی کرنے کی استدعا کی تو عدالت عظمیٰ نے کیس سے متعلقہ تمام اپیلیں اور درخواستیں اکٹھی کرنی کا حکم دیتے ہوئے تمام اپیلیں نومبر کے پہلے ہفتے میں سماعت کے لیے مقرر کرنے کی ہدایت جاری کر دی ہی

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments