فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کا حکومتی فیصلہ کسی صورت قبول نہیں کرینگے،عمائدین قبائلی جرگہ

منگل 30 نومبر 2021 00:22

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 29 نومبر2021ء) قبائلی جرگہ کے عمائدین نے کہا ہے کہ وہ فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کا حکومتی فیصلہ کسی صورت قبول نہیں کرینگے، فاٹا میں پرانا قبائلی نظام بحال کیا جائے، حکومت، سپریم کورٹ بابائے قوم کے قبائیلوں کیساتھ کئے گئے معاہدے کی پاسداری کرے، قبائلی عوام کو حب الوطنی کی سزا نہ دی جائے، قبائلی جرگہ کے عمائدین حاجی باز گل سابق ایم این اے، چیئرمین محمد حسین، نواب فضل کریم، ملک جاوید، ملک نور زمان و دیگر نے نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ فاٹا کے عوام کو اعتماد میں لئے بغیر خیبر پختونخوا میں ایک خود ساختہ اور غیر آئینی طریقے سے جلد بازی میں ضم کیا گیا ہے، پچانوے فیصد قبائلی عوام فاٹا کے کے پی میں انضمام کو مسترد کرتے ہیں صرف پانچ فیصد قبائلی عوام اسکے حق میں ہیں لہذاٰ حکومت اکثریت کے فیصلے کا احترام کرتے ہوئے اس فیصلے کو واپس لے اور ہمارا پرانا قبائلی نظام بحال کیا جائے، قبائلی عوام کو پاکستان سے محبت اور وفاداری کی سزا نہ دی جائے، قبائلی عوام آج بھی وطں عزیز پر اپنی جانیں قربان کرنے کیلئے تیار ہیں، اگر سپریم کورٹ اور حکومت بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح کو مانتے ہیں تو پھر انکے قبائلی عوام کیساتھ کئے گئے اس معاہدے جس میں واضع طور پر یہ کہا گیا ہے کہ قبائلی علاقوں کے متعلق کوئی بھی فیصلہ وہاں کے عوام کی مشاورت کے بغیر نہیں کیا جائیگا کہ پاسداری کرِیں تاکہ قابئلی اپنی روایات کو برقرار رکھ سکیں۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments