ایڈز اور ٹی بی کے مریض میں مبتلا ہزاروں افراد ہر سال انتقال کرجاتے ہیں،ڈاکٹر فیصل سلطان

حکومت ٹی بی، ایچ آئی وی کے شریک انفیکشن جیسی متعدی بیماریوں سے نمٹنے اور اپنے ہیلتھ آؤٹ لیٹس میں مریضوں کی حفاظت کیلئے اقدامات کررہی ہے،معاون خصوصی وزیر اعظم برائے صحت،نیشنل کوارڈنیٹر براے ٹی بی ، ملیریا ایڈز بشیر کھیتران

ہفتہ 4 دسمبر 2021 00:08

کوئٹہ/اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 03 دسمبر2021ء) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان ، نیشنل کوارڈنیٹر براے ٹی بی ، ملیریا ، ایڈز بشیر کھیتران نے کہا ہے کہ حکومت ٹی بی، ایچ آئی وی کے شریک انفیکشن جیسی متعدی بیماریوں سے نمٹنے اور اپنے ہیلتھ آؤٹ لیٹس میں مریضوں کی حفاظت کے لئے اقدامات کررہی ہے،ایڈز اور ٹی بی کے مریض میں مبتلا ہزاروں افراد ہر سال انتقال کرجاتے ہیں، عوام ایڈز اور ٹی بی سے بچاؤ کیلئے حفاظتی تدابیر پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں ۔

یہ بات انہوں نے اسلام آباد میں ایڈز کے عالمی دن کی مناسبت سے منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ تقریب میں یونیسف ، یو این ڈی پی اور یو این ایڈزکے نمائندوں نے بھی شرکت کی ۔

(جاری ہے)

وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اور وفاقی حکومت عوام کو صحت کی سہولیات کی فراہمی کیلئے ہرممکن اقدامات کررہی ہے عوام کو صحت کارڈ کا اجرا ء بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں ایڈز اور ٹی بی کی روک تھام کیلئے ہم سب کو ملکر کام کرنے کی ضرورت ہے ایڈز اور ملیریا سے بچاؤ کیلئے عوام میں شعور اجاگر کیا جائے۔ نیشنل کوارڈنیٹر براے ٹی بی ، ملیریا ، ایڈز بشیر کھیتران نے کہا کہ ایڈز ایک ناسور کی طرح پھیل رہاہے جس میں اب تک دنیابھر میں لاکھوں افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں دنیا بھر میں روزانہ 6000افراد ایڈز کا شکار ہورہے ہیںایڈز سے بچاؤ کا واحد حل حفاظتی تدابیر اختیار کرنا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ایڈز جنسی بے راہ روی ، حجام سے شیو کرتے وقت بلیڈ تبدیل نہ کرانے ،خون لگاتے وقت اسکی تشخیص نہ کرنے سے پھیل رہا ہے، آج کا دن ایڈز کے روک تھام عوام میں ایڈز سے متعلق شعور وآگہی اور ایڈز سے متاثرہ مریضوں کے ساتھ معاشرتی امتیازی رویے کے خاتمے کے طور پر منایا جارہاہے۔انہوں نے کہا کہ ان بیماریوں کو صرف صحت کے مسائل ہی نہیں بلکہ سماجی نوعیت کے مسائل کے طور پر دیکھنے کی بھی ضرورت ہے وفاقی اور صوبائی سطح پر پروگراموں کو درپیش متعدد رکاوٹوں اور چیلنجوں کے باوجود، حکومت پاکستان پورے شعبے میں اور صحت کے نظام کو مضبوط بنانے کے ذریعے ملک میں ایچ آئی وی ایڈز کی روک تھام اور کنٹرول کی تمام سرگرمیوں پر عملدرآمد کے لیے پرعزم ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments