اُردو پوائنٹ پاکستان کراچیکراچی کی خبریںسندھ اسمبلی :تھر میں امن و امان کی صورت حال کے حوالے سے نند کمار کی تحریک ..

سندھ اسمبلی :تھر میں امن و امان کی صورت حال کے حوالے سے نند کمار کی تحریک التواء خلاف ضابطہ قرار

واقعہ کا سندھ حکومت نے فوری نوٹس لیا تھا، ہندو تاجر بھائیوں کے قاتل جلد گرفتار کر لیے جائیں گے ،سہیل انور سیال

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 جنوری2018ء) سندھ اسمبلی میں منگل کو تھر میں امن وامان کی صورت حال کے حوالے سے مسلم لیگ (فنکشنل) کے رکن نند کمار کی تحریک التواء خلاف ضابطہ قرار دے دی گئی ۔ تاہم وزیر داخلہ سہیل انور سیال نے ایوان کو یقین دہانی کرائی کہ مٹھی میں دو تاجر بھائیوں دلیپ اور چندر مہیشواری کے قاتلوں کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا ۔

نند کمار نے اپنی تحریک التواء میں کہا تھا کہ دونوں بھائیوں کو ڈاکؤوں نے دن دہاڑے بے دردی سے قتل کر دیا ، جس سے نہ صرف تھر کا امن تباہ ہوا ہے بلکہ لوگوں میں بہت خوف وہراس پایا جاتا ہے ۔ سینئر وزیر نثار احمد کھوڑو نے اس تحریک التواء کی مخالفت کی اور کہا کہ اس میں ایک سے زیادہ ایشوز اٹھائے گئے ہیں ۔ وزیر داخلہ سہیل انور سیال نے کہا کہ اس واقعہ کا سندھ حکومت نے فوری نوٹس لیا تھا ۔

(خبر جاری ہے)

متعلقہ ایس ایس پی اور ایس ایچ او کو ادارے وجوہ کے نوٹس دیئے گئے تھے ۔ تین اضلاع عمر کوٹ ، میرپورخاص اور تھرپارکر کی پولیس اس معاملے کو دیکھ رہی ہے اور ڈی آئی جی میرپورخاص خود معاملے کی نگرانی کر رہے ہیں ۔ میں نے بھی بلاول بھٹو زرداری اور آصف علی زرداری کی ہدایت پر مٹھی کا دورہ کیا تھا ۔ آئی جی نے بھی وہاں کا دورہ کیا تھا ۔ میں روزانہ کی بنیاد پر اس معاملے کو مانیٹر کر رہا ہوں ۔ دونوں تاجر بھائیوں کے قاتل جلد پکڑے جائیں گے ۔ وزیر داخلہ کی اس یقین دہانی پر اسپیکر آغا سراج درانی نے تحریک التواء خلاف ضابطہ قرار دے دی ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

کراچی شہر کی مزید خبریں