اُردو پوائنٹ پاکستان کراچیکراچی کی خبریںسندھ ہائی کورٹ نے پولیس مقابلہ اور ڈکیتی کے مقدمے میں ملزم منظور کی ..

سندھ ہائی کورٹ نے پولیس مقابلہ اور ڈکیتی کے مقدمے میں ملزم منظور کی سزا کالعدم قرار دے دی

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اگست2018ء)سندھ ہائی کورٹ نے پولیس مقابلہ اور ڈکیتی کے مقدمے میں ماتحت عدالت سے سزا پانے والے ملزم منظور کی سزا کالعدم قرار دیتے ہوئے اسے رہا کرنے کا حکم دیا ہے ۔جمعہ کو سندھ ہائی کورٹ میں پولیس مقابلہ اور ڈکیتی کے مقدمے میں ملزم منظور کی سزا کیخلاف اپیل سے متعلق سماعت ہوئی، عدالت میں وکیل صفائی کا کہنا تھا کہ ملزم منظور پر جھوٹے مقدمات بنائے گئے تھے۔

جبکہ ڈکیتی اور پولیس فائرنگ سے ہلاک ہونیوالا نور الدین دیگر ڈاکوئوں کا ساتھی تھا۔ انسداد دہشتگردی کی عدالت نے گرفتار ملزم امین اللہ کو بارہ سال قید اور جرمانہ کی سزا سنائی تھی۔ اور منظور کو بھی سزا سنائی گئی۔ پولیس کی جانب سے ٹھوس شواہد پیش نہیں کئے جاسکے تھے۔ ماتحت عدالت نے قانونی تقاضے پورے نہیں کئے اور منظور کو سزا سنا دی۔

(خبر جاری ہے)

پولیس کی جانب سے عدالت میں بتایا گیا کہ ہمیں اطلاع ملی تھی کہ کچھ ملزمان ڈکیتی کی منصوبہ بندی کررہے ہیں پولیس نے چھاپہ مارا تو ملزمان کی جانب سے فائرنگ شروع کردی گئی، اور ملزمان کو مقابلے کے بعد گرفتار کیا گیا۔ عدالت نے پولیس کی جانب سے دیئے گئے موقف کو مسترد کرتے ہوئے ماتحت عدالت کی سزا کالعدم قرار دیدی، عدالت نے منظور کو رہا کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست نمٹا دی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

کراچی شہر کی مزید خبریں