وزیراعلی سندھ کا صفائی مشن، کراچی کا دورہ، مخالفین پر سیوریج لائنیں بلاک کرنے کا الزام

جو کام بلدیاتی اداروں کو کرنا تھا وہ سندھ حکومت کر رہی ہے، جو بھی پتھر گٹروں میں ڈال رہا ہے، وہ شہر اور شہریوں کا دشمن ہے، مراد علی شاہ

اتوار ستمبر 19:35

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 22 ستمبر2019ء) سندھ حکومت کا صفائی مشن جاری ہے، وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے دوسرے روز بھی شہر کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہاکہ جو کام بلدیاتی اداروں کو کرنا تھا وہ سندھ حکومت کر رہی ہے،انہوں نے مخالفین پر سیوریج لائنیں بلاک کرنے کا الزام بھی عائد کیا اور کہاکہ جو بھی پتھر گٹروں میں ڈال رہا ہے، وہ شہر اور شہریوں کا دشمن ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلی کی صفائی مہم کے دوران دوسرے روز بھی تابڑ توڑ دورے جاری رہے۔اتوارکی صبح سویرے وزیراعلی ہائوس سے مراد علی شاہ نکلے اور لیاری پہنچے۔ شہریوں سے ملاقاتیں کیں اور مسائل کے حل کی یقین دہانی کرائی۔

(جاری ہے)

لیاری میں ڈی آئی جی سی آئی اے کے دفتر کے باہر موجود کچرہ پر وزیراعلی نے برہمی کا اظہار کیا اور حکام کو فوری کچرہ اٹھانے کی ہدایت کی۔

مراد علی شاہ نے مچھر کالونی ہاکس بے روڈ اور مشرف کالونی کا دورہ بھی کیا۔ صفائی ستھرائی کے کاموں کا جائزہ لیا۔بھینس کالونی پہنچنے پر جیالوں نے وزیراعلی کا استقبال کیا، اس موقع پر میڈیا سے گفتگو میں مراد علی شاہ نے کہاکہ اداروں کا کام ہمیں کرنا پڑ رہا ہے۔مراد علی شاہ نے مخالفین پر سیوریج لائنوں میں پتھر پھینکنے کا الزام بھی عائد کیا۔

انہوں نے کہاکہ کراچی کو صاف ستھرا کر کے متعلقہ ڈی ایم سیز کے حوالے کریں گے۔ وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے ملیر ہالٹ، کالا بورڈ اور ملیر 15 کے علاقوں میں سیوریج کا معائنہ کیا ہے۔وزیراعلی سندھ کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ ملیر میں گٹر سے صفائی کے دوران بھاری پتھر نکلے ہیں۔ترجمان وزیراعلی کے مطابق پی ٹی آئی ایم این اے اکرم نے یہاں دھرنا دیا تھا، لوگوں کا خیال ہے کہ اس وقت یہاں گٹر میں پتھر ڈالے گئے ہوں گے۔وزیر اعلی کے دورے کے موقع پر صوبائی وزرا بھی انکے ہمراہ تھے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments