سپریم کورٹ نے کم عمر بچے کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج کرنے والے برطرف پولیس اہلکار کی اپیل پر سروس ٹربیونل کا فیصلہ معطل کردیا

جمعرات 28 اکتوبر 2021 15:58

سپریم کورٹ نے کم عمر بچے کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج کرنے والے برطرف پولیس اہلکار کی اپیل پر سروس ٹربیونل کا فیصلہ معطل کردیا
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 28 اکتوبر2021ء) سپریم کورٹ نے کم عمر بچے کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج کرنے والے برطرف پولیس اہلکار کی اپیل پر سروس ٹربیونل کا فیصلہ معطل کردیا۔ جمعرات کوسپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس کی سربراہی بینچ کے روبرو کم عمر بچے کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج کرنے والے برطرف پولیس اہلکار کی اپیل پر سماعت ہوئی۔

عدالت نے سروس ٹربیونل کا فیصلہ معطل کردیا۔

(جاری ہے)

سروس ٹربیونل نے انسپکٹر یعقوب کو بحال کرنے کا حکم دیا تھا۔ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل صولت رضوی نے موقف دیا کہ کم عمر بچے علی شاہ کیخلاف دہشتگردی کا مقدمہ درج کیا تھا۔ آئی جی سندھ پولیس نے تفتیشی افسر کی پہلے تنزلی بعد میں برطرف کردیا تھا۔ سروس ٹربیونل نے برطرف تفتیشی افسر کیخلاف کارروائی کو کالعدم قرار دے دیا تھا۔ سروس ٹربیونل کے فیصلے کے مطابق کارروائی کا اختیار ڈی آئی جی کے پاس ہے۔ آئی جی سندھ ادارے کا سربراہ ہے اس کارروائی کا قانونی اختیار حاصل ہے۔ عدالت نے مزید سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments