اُردو پوائنٹ پاکستان کراچیکراچی کی خبریںسندھ اسمبلی اجلاس میں کراچی شہر میں بڑھتے ہوئے اسٹریٹ کرائمز کے حوالے ..

سندھ اسمبلی اجلاس میں کراچی شہر میں بڑھتے ہوئے اسٹریٹ کرائمز کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف خرم شیر زمان کی تحریک التواء خلاف ضابطہ قرار دے دی گئی

, میری اپنی بیٹی کے ساتھ ڈکیتی کا واقعہ ہوا ہے ، حکومت کہتی ہے کہ سب ٹھیک ہے ،اللہ کرے چیف جسٹس اس معاملے کا نوٹس لیں تاکہ یہ مسئلہ حل ہو جائے، خرم شیر زمان

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 جنوری2018ء)سندھ اسمبلی کے پیر کو ہونے والے اجلاس میں کراچی شہر میں بڑھتے ہوئے اسٹریٹ کرائمز کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف خرم شیر زمان کی تحریک التواء خلاف ضابطہ قرار دے دی ۔ خرم شیر زمان نے کہا کہ پورے کراچی میں اسٹریٹ کرائم میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے ۔ سینئر وزیر خوراک و پارلیمانی امور نثار احمد کھوڑ نے فنی بنیادوں پر تحریک التواء کی مخالفت کی ۔

خرم شیر زمان نے کہا کہ کراچی میں لوگوں کو سرعام لوٹا جا رہا ہے ۔ میری اپنی بیٹی کے ساتھ ڈکیتی کا واقعہ ہوا ہے ۔ حکومت کہتی ہے کہ سب ٹھیک ہے ۔ اللہ کرے چیف جسٹس اس معاملے کا نوٹس لیں تاکہ یہ مسئلہ حل ہو جائے ۔ نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ کراچی میں امن وامان کی صورت حال بہتر ہوئی ہے ۔

(خبر جاری ہے)

اس پر کیوں بات نہیں کی جاتی ۔ اب آزادی کا ماحول ملا ہے ۔

بوری بند لایشن ملنا بند ہو گئی ہیں ۔ کراچی میں جو کچھ ہو رہا تھا ، حکومت سندھ نے اس پر کنٹرول کیا ۔ رینجرز کو خصوصی اختیارات دیئے گئے ۔ اب حالات اتنے بہتر ہیں کہ خصوصی اختیارات دیئے بغیر بھی کام چل سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اسٹریٹ کرائمز ہیں ۔ دہشت گردی میں کمی ہوئی ہے تو اسٹریٹ کرائمز میں اضافہ ہوا ہے ۔ لیکن حکومت انہیں کنٹرول کر رہی ہے ۔ ڈپٹی اسپیکر سیدہ شہلا رضا نے تحریک التواء کو خلاف ضابطہ قرار دے دیا ۔ #

اپنی رائے کا اظہار کریں -

کراچی شہر کی مزید خبریں