بلا اشتعال فائرنگ کر کے شکیل انصاری کو شہید کیاگیا اور اعظم ظہور شدید زخمی ہیں،فیصل سبزواری

حکومت پاکستان اور وزیراعلی سندھ نوٹس لیں ہم اسمبلیوں سمیت ہر فورم پہ اس واقعہ پر آواز اٹھائیں گے

منگل فروری 22:50

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 فروری2019ء) ایم کیوایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی کے رکن فیصل سبزواری نے ایم کیوایم کے شہید کارکن شکیل انصاری کی تدفین کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ رات مسلح افراد نے یوسی آفس میں گھس کر بلا اشتعال فائرنگ کر کے ہمارے کارکن کو شہید کیاگیا اور اعظم ظہور شدید زخمی ہیں کراچی میں حاصل ہونے والے امن کی ہم قدر کرتے ہیں لیکن اتنی معروف شاہراہ پر 3موٹر سائیکلوں پر سوار جدید قسم کااسلحہ کھلے عام لے کر آمد اور آزادنہ کاروائی نے سوالات کو جنم دیا ہے فیصل سبزواری نے کہا کہ نیوکراچی تھانہ آدھا کلومیٹر کے فاصلے پر ہے اس کے باوجود آزادی سے دہشت گرد فرار ہوئے امن و آمان کے دعوے ملیا میٹ کردیے گئے پچھلے چند ماہ میں درجنوں بے گناہ ساتھیوں کوگرفتار کر کے چرس ،ہنیڈ گرینڈ منشیات کے مقدمات بنائے گئے زیادتیوں کی حد کردی گئی ہے اگر امن قائم کرنا ہے تو زیادتی بند کرنا ہوگی فیصل سبزواری نے کہا کہ ایم کیوایم پاکستان کے کسی بھی کارکن کے پاس اسلحہ نہیں ہے حکومت پاکستان اور وزیراعلی سندھ نوٹس لیں ہم اسمبلیوں سمیت ہر فورم پہ اس واقعہ پر آواز اٹھائیں گے ہم پر دہشت گردی کے الزام لگتے رہے اب بتایا جائے دہشت گردی کون کر رہا ہے شہری کے سیاسی امن کے لئے ایم کیوایم پاکستان جان ہتھیلی پہ لے کر کام کررہی ہے ایم کیوایم پاکستان کے تمام رہنماں سمیت ایک ایک کارکن کو مکمل تحفظ فراہم کیا جائے علی رضا عابدی شکیل انصار ی کے قاتلوں کو گرفتار کیا جائے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments