پی آئی اے کی خاتون افسر کو ہراساں کرنے کا انکشاف، سی ای او نے نوٹس لے لیا

موجودہ انتظامیہ خواتین کے حقوق اور ان سے کی جانے والی کسی بھی نا انصافی کے سد باب پر یقین رکھتی ہے، ترجمان پی آئی اے

جمعرات اپریل 15:00

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 اپریل2019ء) پی آئی اے کی خاتون افسر کی جانب سے مبینہ طور پر جنسی ہراساں کرنے کی شکایت کا سی ای او ایئر مارشل ارشد ملک نے سختی سے نوٹس لیتے ہوئے خاتون کی تحریری شکایات ایئرلائن کی وومن پروٹیکیشن کمیٹی کو بھیج دی ہے۔تفصیلات کے مطابق پی آئی اے ی خاتون افسر نے اپنے سینئر افسر پر جنسی طور پر ہراساں رنے ا الزام عائد کرتے ہوئے سی ای او پی آئی اے ایئرمارشل ارشد ملک اور چیف ہیومن ریسورسز کے نام ای میل میں اس کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

اس معاملے پر پی آئی اے کے سی ای او نے سخت نوٹس لیتے ہوئے تحریری شکایت منصفانہ تحقیقات کے لئے ایئر لائن وومن پروٹیکشن کمیٹی کو روانہ کردی اور ہدایات جاری کی ہیں کہ معاملے کی جلد از جلد تحقیقات مکمل کرکے رپورٹ پیش کی جائے۔

(جاری ہے)

خاتون نے بتایا کہ کہ سینئر افسر کی فون کالزکاسارا ریکارڈ موجود ہے، اگر کارروائی نہ کی گئی تو وزیر اعظم عمران خان اور چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کو درخواست دوں گی۔

اس حوالے سے ترجمان پی آئی اے محمدمشہود تاجور نے کہاکہ کمیٹی کی تحقیقات کے بعد ان کی سفارشات پر مکمل عمل در آمد کیا جائے گا، موجودہ انتظامیہ خواتین کے حقوق اور ان سے کی جانے والی کسی بھی نا انصافی کے سد باب پر یقین رکھتی ہے۔ترجمان نے کہاکہ پی آئی اے میں اصلاحات کا عمل تیزی سے جاری ہے اس کو روکنے کیلئے منفی پروپیگنڈے کئے جارہے ہیں۔ذرائع کے مطابق مذکورہ خاتون نے سی ای او کو ای میل کی تھی کہ ایک افسر اسے جنسی طور پر ہراساں کر رہا ہے مذکورہ خاتون پی آئی اے اسلام آباد میں بکنگ اینڈ ٹکٹنگ آفیسر ہے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments