مدارس دینیہ امن اور سلامتی کے ضامن ہیں، تعلیم انسانی اخلاقی قدروں کے محافظ ہیں، مولانا ڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر

داخلوں میں اضافہ کے رجحان مدارس پہ عوامی اعتماد کا مظہر ہے، مدارس کا نظام تربیت مہذب معاشرہ کیلئے ایک مثال ہے، مولانا امداداللہ یوسف زئی

منگل جون 21:54

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 25 جون2019ء) مدارس دینیہ امن و سلامتی کے مراکز ہیں، پاکستان کے مدارس میں تعلیم یافتہ آج دنیا کے اکثر ممالک میں سفیر کا کردار ادا کررہے ہیں، مدارس کے اعلی خدمات کی وجہ سے ہزاروں مدارس میں داخلوں میں اضافہ کی وجہ سے کمی کاسامنا ہے۔ دینی اداروں کی بہترین تربیتی نظام کی بدولت معاشرہ میں مہذب اخلاقی قدریں بھی پروان چڑھ رہی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے صدر مولانا ڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر اور ناظم صوبہ سندھ مولانا امداداللہ یوسف زئی نے معروف دینی ادارہ جامعہ علوم اسلامیہ بنوری ٹائون کراچی میں تعلیمی سال کے افتتاحی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پہ جامعہ بنوری ٹائون کے مولانا محمد انور بدخشانی، مولانا محمد زیب، مولانا فضل محمد، مولانا عبدالرئوف غزنوی نے بھی سینکڑوں علماء و ہزاروں طلبہ و طالبات سے خطاب کیا۔

(جاری ہے)

جامعہ کے مہتمم اور صدر وفاق مولانا ڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر نے اپنے کلیدی خطاب میں کہا کہ مدارس کی تاریخ اسلام کی تاریخ ہے، مدارس دین و اسلام کی اشاعت کا ذریعہ ہیں، انسانیت کے پیغام امن وسلامتی کی حفاظت کے ضامن بھی مدارس ہیں، پاکستان کے ہزاروں مدارس کے تربیت یافتہ لاکھوں علماء وحفاظ آج دنیا بھر میں تبلیغ دین و اشاعت میں جو روشن کردار ادا کر رہے ہیں وہ درحقیقت اس مملکت کے بے لوث سفیر ہیں، اور ملک کے اسلامی تشخص کو اجاگر کرتے ہوئے نیک نامی کا سبب ہیں، انہوں نے کہا کہ افسوس ناک بات یہ ہے کہ بعض اندورنی و بیرونی قوتیں مدارس کے خلاف منفی تاثر قائم کرنے میں مصروف ہیں ایسے عناصر کو دعوت دیتے ہیں کہ وہ ہمارے اداروں میں آکر ہمارے نظام تعلیم و تربیت کا جائزہ لیں، اگر ہمارے نظام میں ان کو قابل اصلاح ہو تو نشاندہی کریں، انہوں نے مزید کہا کہ مدارس دینیہ میں پڑھنے والے اسی معاشرہ کے افراد ہیں اور معاشرہ کے مہذب اخلاقی قدروں کی روایت کی پاسداری میں مدارس کے بلند کردار کو دیکھا جاسکتا ہے۔

اس موقع پہ وفاق المدارس العربیہ سندھ کے ناظم اور جامعہ بنوری ٹائون کے استاد الحدیث و ناظم تعلیمات مولانا امداداللہ یوسف زئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہر سال کی طرح امسال بھی مدارس میں داخلوں کے رجحان میں جو اضافہ نظر آرہا ہے اس سے مدارس کی خدمات پہ زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والوں کے اعتماد کو دیکھا جاسکتا ہے، مدارس دینیہ کی جانب سے لاکھوں طلبہ کو اعلی دینی تعلیم وتربیت کے ساتھ عصری علوم بھی اپنی فنی مہارت کے ساتھ پڑھا رہے ہیں، قیام و طعام اور علاج سمیت ہر ضروری سہولت لاکھوں طلبہ وطالبات کو ان اداروں میں مفت فراہم کی جاتی ہیں، انہوں نے کہا کہ مدارس دین اسلام کیلئے افراد سازی میں بنیادی کردار ادا کر رہے ہیں، انہوں نے طلبہ و طالبات کو اوقات اور نظم و ضبط کی پابندی کی ہدایات بھی جاری کیں، اس موقع پہ جامعہ بنوری ٹائون کے نائب مہتمم مولانا سید سلیمان بنوری، بزرگ استاد حدیث مولانا عبدالحلیم چشتی، مولانا قاری مفتاح اللہ، مفتی محمد رفیق بالاکوٹی، مولانا ڈاکٹر سعید خان اسکندر، مولانا محمد سعد شمیم، مولانا محب اللہ، مولانا سید احمدیوسف بنوری، مولانامحمد ایاز سمیت سینکڑوں علماء، ہزاروں طلبہ و طالبات اور ان کے سرپرست حضرات کی بہت بڑی تعداد بھی موجود تھی۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments