ریٹائر اور وفات پاجانے والے ملازمین کو گروپ انشورنس کی ادائیگی کے لیے سجن یونین کا سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ

جمعہ ستمبر 18:46

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 20 ستمبر2019ء) سجن یونین (سی بی ای) کے ایم سی کے مرکزسی صدر سیدذوالفقارشاہ نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کا پشاور ہائی کورٹ کے ریٹائر منٹ پر گروپ انشورنس کی ادائیگی کے فیصلے کو برقرار رکھنے کے حکم کے بعد کے پی کے حکومت اور بلوچستان حکومت نے ریٹائر ملازمین کو گروپ انشورنس کی ادائیگی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے جبکہ حکوت پنجاب اور حکومت سندھ نے تاحال اس سلسلے میں صرف کمیٹی قائم کرنے پر ہی اکتفا کیا ہوا ہے جس سے ان دونوں صوبوں کے ملازمین میں سخت بے چینی اور بے یقینی پائی جاتی ہے بلدیاتی ملازمین کو گروپ انشورنس کی بعد ازریٹائرمنٹ اور بعد از وفات لواحقین کو ادائیگی کے لیے سجن یونین کے صدر اور آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرزفیڈریشن کے مرکزی چیئرمین ہونے کے ناطے سیدذوالفقارشاہ نے طویل مشاورت کے بعد سندھ ہائی کورٹ میں آئینی درخواست دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

(جاری ہے)

درخواست کی پیروی سابق جسٹس شہاب سرکی ۔جسٹس ہیلپ لائن کے صدر ندیم شیخ ایڈوکیٹ ،سلیم مائیکل ایڈوکیٹ پر مشتمل پینل کرے گا ۔پٹیشن کی تیاری کا عمل تقریباًمکمل کرلیا گیا ہے انہوں نے بتایا کہ کے ایم سی 2016کے جون کے بعد وفات پاجانیت والے ڈی ایم سیز ملازمین کو ادائیگی نہیں کررہی ہے ۔جبکہ ڈی ایم سی ایسٹ ،کورنگی اور سینٹرل بھی اس سلسلے میں مرحوم ملازمین کو دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور کررہی ہے ۔

لٰہذا اس غیر قانونی عمل کو بھی چیلنج کیا جائے گا ۔دریں اثناء سجن یونین (سی بی ای) کے ایم سی کے مرکزی صدر سیدذوالفقارشاہ نے بلدیہ جنوبی کے میونسپل کمشنر پر غیر قانونی دبائو ڈال کر OPS,ایکس کیڈر ،نان کیڈر پرموشنز اور تقرری وتبادلے کرنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم کے تحت بلدیہ جنوبی میں OPS،کیڈر ،ایکس کیڈر ،آئوٹ آف ٹرن پرموشن کو بھی سندھ ہائی کورٹ میں زیر التواء پٹیشن کا حصہ بنانے کا بھی فیصلہ کیا ہے اور موجودہ انتظامیہ وعوامی نمائندوں کے غیر قانونی اقدامات کو بھی چیلنج کیا جائے گا ۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments