عالمی برادری سندھ کے بارش سے متاثرہ افراد کی مدد کرے پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ

پیر ستمبر 17:16

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 21 ستمبر2020ء) عالمی برادری سندھ کے بارش سے متاثرہ افراد کی مدد کرے یہ بات روٹری کلب انٹر نیشنل کے ڈسٹرکٹ گورنر3271پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے متاثرین میںروٹری کلب انٹرنیشنل کی جانب سے چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ کی ہدایت پر سندھ کے علاقے،میر پور خاص،عمر کوٹ،گزری اورسمارو میں بارش اور سیلاب کے متاثرین میںروٹری کلب انٹرنیشنل کی جانب سی80لاکھ روپے سے زائد کا راشن،مچھر دانیاں، لوشن اور دیگر اشیاء ضروریہ تقسیم کرنے کے موقع پر کہی اس موقع پر،ر وٹری کلب آف کراچی کرائون کے سابق پریذیڈینٹ فرحان حنیف،کاٹی کے سابق صدر دانش خان، کمشنر میر پور خاص وحید شیخ،ڈی سی زاہد میمن،ڈی آئی جی ذوالفقار طارق،عبدالروف آرائیں اور دیگر روٹرین بھی موجود تھے پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کہا کہ روٹری کلب سندھ کے بارش اور سیلاب زدگان کی مدد کر رہا ہے روٹری کلب انٹرنیشنل کی جانب سے متاثرین میں امدادی سامان تقسیم کیا جا رہا ہے تا کہ ان کی بحالی ممکن ہو سکے انہوںنے کہاکہ روٹری کلب کا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں ہے روٹری کلب انسانیت کی خدمت کے جذبے کے تحت کام کر رہا ہی* پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کہا کہ حکومت قدرتی آبی گزر گاہوں سے قبضے ختم کرائے تا کہ مستقبل میں بارش کے پانی کی نکاسی ممکن ہو سکے انہوںنے کہا کہ بارش اور سیلاب سے متاثرہ علاقوں میںروٹری کلب کی جانب سے میڈیکل کیمپ بھی قائم کئے جا رہے ہیںچونکہ بارش کے پانی کی وجہ سے علاقے میں متعدد وبائی امراض پھیل رہے ہیں جس سے عوام میں ملیریا،ڈینگی ،ہیپا ٹائیٹس اور گیسٹرو کے علاوہ پیٹ کی دیگر بیماریاں پیدا ہو گئی ہیں جن سے بچائو کے لئے متاثرین کو طبی امداد اور علاج معالجے کی شدید ضرورت ہے ر وٹری کلب آف کراچی کرائون کے سابق پریذیڈینٹ فرحان حنیف نے کہا کہ سیلاب زدگان آج بھی حکومت اور دیگر مخیرافراد کی جانب سے امداد کے منتظر ہیںچونکہ انہیں حالیہ بارشوں اور سیلاب میں بہت جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے جس کی وجہ سے وہ رہائش اور کھانے پینے کی اشیاء کے علاوہ دیگر ضروریات زندگی سے محروم ہو گئے ہیں اس موقع پرکا ٹی کے سابق صدر دانش خان نے کہاکہ سندھ میں ہزارو ں ایکڑ پر کھڑی فصلیں بھی تباہ ہوگئی ہیں اور مال مویشی بھی سیلاب کی نظر ہو گئے ہیں جس کی وجہ سے غریب متاثرین کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا ہے ۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments