تعلیمی اداروں ومدارس کو دوبارہ بند کرنے کا فیصلہ غیردانشمندانہ اورتعلیم دشمنی ہے،جماعت اسلامی

ایس اوپیزپرعمل درآمد کو یقینی بناتے ہوئے تعلیمی سرگرمیوں کو جاری رکھنے کا مطالبہ

منگل نومبر 23:27

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 24 نومبر2020ء) جماعت اسلامی سندھ نے کوروناکی آڑ میں تمام تعلیمی اداروں ومدارس کو دوبارہ بند کرنے والے حکومتی فیصلے کو غیردانشمندانہ اورتعلیم دشمنی قراردیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ایس اوپیزپرعمل درآمد کو یقینی بناتے ہوئے تعلیمی سرگرمیوں کو جاری رکھا جائے۔صوبائی جنرل سیکرٹری کاشف سعید شیخ نے کہاکہ تعلیمی اداروں اورمدارس کی ازسر نو بندش سے نہ صرف پرائیویٹ اسکول مالکان بلکہ اس شعبہ سے وابستہ افراد اوروالدین بھی سخت پریشان ہیں۔

پہلے ہی کورونا وبا کی وجہ سے تعلیم کا نقصان ہوچکا ہے مزید براں سندھ میں تو ایمرجنسی کے اعلان کے باوجود تعلیم کا شعبہ تباہ حال اورسب سے زیادہ نیب میں ان کے کسی چل رہے ہیں۔پی ٹی آئی حکومت کمرتوڑ مہنگائی،بیرو زگاری،کرپشن اورنااہلی کی وجہ سے کورونا کی آڑ میں چھپنا چاہتی ہے ،تعلیم کے شعبے کو بھی اسی بھینٹ پرچڑھانا چاہتی ہے ۔

(جاری ہے)

انتخابات اس نے جتنے بھی وعدے کئے تھے کوئی ایک بھی وعدہ پورا نہیں کیا گیا۔

بھیک وقرض نہ مانگنے کے اعلانات کے باوجود مختصر مدت میں تمام رکارڈ توڑ دیے ہیں ،معیشت تباہ، مہنگائی کا طوفان اورعام آدمی دووقت کی روٹی کے لیے بھی سخت پریشان ہے۔ اس لیے موجودہ حکومت کے نوسو دن نااہلی و ناکامی سے بھرے پڑے ہیں۔مگراب زیادہ دیر تک عوام کے غیض وغضب سے بچ نہیں سکتی۔انہوں نے کہاکہ باقی سب کچھ بند کیا جائے مگر تعلیمی سرگرمیوں کو بحال رکھاجائے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments