کورونا کی دوسری لہر کے پیشِ نظر پی آئی اے انتظامیہ کاحفاظتی اقدامات سخت کرنے کا فیصلہ

اندرون ملک جانے والی پروازوں میں کافی یا چائے بھی پیش نہیں کی جائیں گی۔اندرون ملک جانے والی پروازوں میں کھانے کی فراہمی پہلے ہی بندکردی گئی

بدھ نومبر 22:05

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 25 نومبر2020ء) کورونا کی دوسری لہر کے پیشِ نظر پی آئی اے انتظامیہ نے حفاظتی اقدامات سخت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اندرون ملک جانے والی پروازوں پر مشروبات کی فراہمی ٹرالی کے ذریعے بند کر دی گئی ہے جبکہ اندرون ملک جانے والی پروازوں میں کافی یا چائے بھی پیش نہیں کی جائیں گی۔اندرون ملک جانے والی پروازوں میں کھانے کی فراہمی پہلے ہی بندکردی گئی ہے۔

پی آئی اے کے شعبہ فلائٹ سروسز کی جانب سے فضائی میزبانوں کو جاری احکامات کر دیئے گئے ہیں۔ترجمان پی آئی اے کے مطابق اندرون ملک پروازوں میں صرف ڈبے میں پیک اشیاء اور ٹھنڈے مشروبات پیش کیے جائیں گے، ذرائع کے مطابق پی آئی اے کے چیف ایگزیکٹو ارشد ملک نے کھانے کی سروسز میں تبدیلی کی منظوری دے دی ہے۔

(جاری ہے)

کھانے کے مینیو میں تبدیلی کا اطلاق فوری طور پر کر دیا گیا ہے، قومی ایئر لائن نے سعودی عرب سیکٹر کے لیے اسنیکس، کلب سینڈوچز، چکن پیٹیز، ایک کیلا اور مفن پیش کرنے جب کہ کافی یا چائے پیش نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سعودی سیکٹر سے واپسی کی پرواز پر کلب سینڈوچز، چکن پیٹیز، ایک کیلا اور بسکٹ پیش کیے جائیں گے، کابل اور خلیجی ممالک کی پروازوں میں صرف ہلکی پھلکی غذائیں یعنی اسنیکس پیش کیے جائیں گے۔ترجمان پی آئی اے کے مطابق کھانے کی سروس میں تبدیلی حفاظتی اقدامات کے تحت مسافروں اور عملے کے ارکان کے درمیان رابطے کو کم کرنے کے لیے کی گئی ہے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments