صوبائی وزیر مذہبی امورناصر حسین شاہ کی زیر صدارت محرم الحرام میں مجالس کے انتظامات اور امن و امان کے حوالے سے ایک اعلی سطحی اجلاس کا انعقاد

فول پروف سیکیورٹی کے انتظامات کرنے کے لیے پولیس رینجر سمیت قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کی مدد سے جامع پلان مرتب کیا جائے گا ہم ایس او پیزپر عمل درآمد کرنے کے لئے تیار ہیں، جبکہ علمائے کرام سے واپس لی گئی سیکورٹی کے فیصلے پر نظرثانی کی جائے، علماء

پیر 26 جولائی 2021 23:15

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 26 جولائی2021ء) صوبائی وزیر برائے مذہبی امور، بلدیات و اطلاعات سید ناصر حسین شاہ کی زیر صدارت محرم الحرام میں مجالس کے انتظامات اور امن و امان کے حوالے سے ایک اعلی سطحی اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔جس میں حسین مسعودی،سید شبر رضا، مولاناصادق جعفری، علامہ سید عرفان عابدی، علامہ سید اصغرنقوی، علامہ ثقلین حیدر ،سید کرار نقوی و دیگر نے شرکت کی جبکہ وزیراعلی سندھ کے معاون خصوصی وقار مہدی ، کو آ ر ڈینیٹر برا ئے وزیر مذہبی امو ر ڈاکٹر علا مہ جمیل را ٹھو ر ،ایڈیشنل چیف سیکریٹری محکمہ داخلہ قاضی شاہد پرویز ،ایڈمنسٹریٹر کے ایم سی لئیق احمد د، ایم ڈی واٹر بورڈ اسد اللہ،ڈی آئی جی سی آئی ڈی نعما ن صدیقی اور دیگر افسران بھی مو جو د تھے۔

(جاری ہے)

اس موقع پر صوبائی وزیر برائے مذہبی امور، بلدیات و اطلاعات سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ محرم الحرام کے ایام کے دوران مختلف مسائل کی نشاندہی اور ان کے حل کے لیے یہ اجلاس منعقد کیا گیا ہے اس حوالے سے آج ابتدائی اجلاس ہے جبکہ دوسرا اجلاس وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت ہوگا، جبکہ کراچی میں محرم الحرام میں انتظامات کے حوالے سے وزیراعلی سندھ کے معاون خصوصی وقار مہدی نگرانی کریں گے۔

سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ سندھ حکومت کی جانب سے فول پروف سیکیورٹی کے انتظامات کرنے کے لیے پولیس رینجر سمیت قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کی مدد سے جامع پلان مرتب کیا جائے گا ۔صوبائی وزیر مذہبی امور بلدیات و اطلاعات نے کہا کہ اس حوالے سے پورے صوبہ میں کمشنر ز و ڈپٹی کمشنر ز بھی ڈو یژن و ڈسٹرکٹس کی سطح پر تمام اسٹیک ہولڈرز سے مل کر اجلاس منعقد کریں گے۔

سید ناصر حسین شاہ نے بتایا کہ امام بارگاہوں اور جلوسوں کی گزرگاہوں پر صفائی کے خصوصی انتظامات کئے جائیں گے جبکہ پانی کی فراہمی کے لئے واٹر بورڈ کی انتظامیہ کو خصوصی ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ مجالس کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی کے لیے کے الیکٹرک کو کہا جائے گا۔ اس موقع پر علمائے کرام نے سندھ حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہم سندھ حکومت کے مشکور ہیں کہ اس نے صحیح وقت پر اجلاس طلب کیا۔

انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے پہلے بھی اس حوالے سے اقدامات کیے ہیں اور اس مرتبہ بھی معقول انتظامات کیے جائیں گے اور اس حوالے سے ہم سب آپ سے ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہیں۔ اس موقع پر علماء کرام کی جانب سے مطالبات کیے گئے کہ ضلعی سطح پر علماء پر مشتمل کمیٹیاں تشکیل دی جائیں جبکہ ہر سال علماء کی مختلف اضلاع میں داخلے پر پابندی عائد ہونے کے حوالے سے لسٹ جو کہ یکم محرم الحرام کو جاری کی جاتی تھی اسے پہلے ہی جاری کر دیا جائے،تا کہ اس کے مطا بق مجا لس کا انعقا د کیا جا سکے ۔

انہوں نے کہا کہ سینٹرل جیل کراچی میں 20 سال سے عزاداری کی اجازت دی جاتی تھی لیکن گزشتہ 2 سالو ں سے کرو نا کی وبا ء کے با عث اس پر پابندی عائد ہے،اس پابندی کو ختم کرکے جیلوں میں عزاداری کی اجازت دی جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ سال سندھ کے کئی شہرو ں میں گھر و ں میں منعقد ہو نے والی مجالس کے اہتمام پر ایف آئی آرز درج کی گئیں تھیں اس سلسلے کو ختم کیا جائے ۔

انہوں نے کہا کہ ہم ایس او پیزپر عمل درآمد کرنے کے لئے تیار ہیں، جبکہ علمائے کرام سے واپس لی گئی سیکورٹی کے فیصلے پر نظرثانی کی جائے۔اس موقع پر سید ناصر حسین شاہ نے شرکاء کو یقین دلایا کہ اجلاس میں موجود انتظامیہ نے تمام مسائل سن لیے ہیں انہو ں نے افسرا ن کو ہدایا ت دیں کہ ان مسائل کو حل کیا جا ئے ۔انہوں نے کہا کہ ضلعی سطح پر پیس کمیٹیاں بنائی جائیں گی جن میں تمام مکاتب فکر کے علمائے کرام کو شامل کیا جائے گا۔

صوبائی وزیر برائے مذہبی امور بلدیات و اطلاعات نے افسران پر زور دیا کہ تمام مسائل فوری حل کئے جائیں اور ذمہ داری کسی اور پر منتقل نہ کریں۔انہو ں نے کہا کہ کنٹو نمنٹ بو ر ڈ کے علاقے ہو ں یا کسی اور کے ،کا م ہم نے ہی کر نا ہے ۔ انہوں نے ایڈمنسٹریٹر کے ایم سی اور ڈی ایم سیز کے ایڈمنسٹرز کو ہدایت دیں کہ علاقوں کا دورہ کریں اور انتظامات کو یقینی بنائیں۔

انہوں نے علما ء سے اپیل کی کہ کرو نا ایس اوپیز پر عمل کیا جائے اور اپنے خطبا ت میں عوام کو کرو نا ویکسینیشن کی تر غیب دیں۔انہو ں نے کہا کہ علما ء کے مشورے سے ویکسینیشن سینٹرز بھی قائم کیے جائیں گے۔انہوں نے انتظامیہ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ میں خود علاقوں کا دورہ کروں گا اور اگر انتظا ما ت میں کوتاہی نظر آئی تو سخت کاروائی کی جائے گی۔ سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ ایف آئی آر ،فو ر تھ شیڈول اور فائر برانڈ اسپیکرزکے ایشوز پر ایڈیشنل چیف سیکریٹری داخلہ الگ سے اجلاس منعقد کریں گے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments