کراچی،رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں جاری کھاتے کو 3ارب 40کروڑ ڈالر کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا

بدھ 20 اکتوبر 2021 23:56

کراچی،رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں جاری کھاتے کو 3ارب 40کروڑ ڈالر کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 20 اکتوبر2021ء) رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں جاری کھاتے کو 3ارب 40کروڑ ڈالر کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا، گزشتہ مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں 86کروڑ50لاکھ ڈالر فاضل رہنے والا جاری کھاتہ بڑھتی ہوئی درآمدات کی وجہ سے شدید خسارے کی لپیٹ میں آگیا ہے۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعدادوشمار کے مطابق جاری کھاتے کو اگست میں ایک ارب 47کروڑ 30لاکھ ڈالر کے خسارے کے بعد ستمبر میں ایک ارب 11کروڑ30لاکھ ڈالر خسارے کا سامنا کرنا پڑا، پہلی سہ ماہی کا مجموعی خسارہ 3ارب 40کروڑ ڈالر کی سطح پر آگیا۔

پہلی سہ ماہی کے دوران جاری کھاتے کو بڑھانے میں درآمدات کے باعث زرمبادلہ کے ذخائر پر پڑنے والے دباؤ نے اہم کردار ادا کیا، پہلی سہ ماہی کے دوران برآمدات 7ارب 24کروڑ ڈالر جبکہ درآمدات کی مالیت 17 ارب 47کروڑ ڈالر رہی، اس طرح پہلی سہ ماہی کا تجارتی خسارہ 10ارب 23کروڑ ڈالر رہا جبکہ گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں برآمدت 5ارب 35کروڑ ڈالر جبکہ درآمدات 10ارب 63کروڑ ڈالر رہی تھیں اور تجارتی خسارہ کی مالیت 5ارب 28کروڑڈالر ریکارڈ کی گئی تھی۔

(جاری ہے)

رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں اشیاء و خدمات کی تجارت کا مجموعی خسارہ 10ارب 95کروڑ ڈالر رہا جبکہ گزشتہ مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں اشیاء و خدمات کی تجارت کا مجموعی خسارہ 5ارب 81کروڑ ڈالر رہا تھا

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments