ٹیکنالوجی کے غلط استعمال کی وجہ سے نوجوان تیزی سے غیرمساویانہ رویے اختیار کررہے ہیں، ڈاکٹر زبیر احمد شیخ

پیر 25 اکتوبر 2021 23:40

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 25 اکتوبر2021ء) محمد علی جناح یونیورسٹی کے صدر اور وی سی ڈاکٹر زبیراحمد شیخ نے کہا کہ ٹیکنالوجی کے غلط استعمال کی وجہ سے نوجوان تیزی سے غیرمساویانہ رویے اختیار کررہے ہیں،ایسے رویوں کوختم کرنا آسان نہیں۔وہ ذہنی صحت کے عالمی دن کی مناسبت سے محمد علی جناح یونیورسٹی کے شعبہ سائیکالوجی کے زیراہتمام ہونے والے سیمینارسے خطاب کررہے تھے۔

اس سال ورلڈ مینٹل ڈے کا عنوان’’غیرمساوی دنیا میں ذہنی صحت کا کیسے خیال رکھا جائے‘‘ ہے۔سیمینار سے مہمان خصوصی جامعہ کراچی کی ایسوسی ایٹ پروفیسر اور کلینیکل سائیکا لوجسٹ پروفیسر روبینہ فیروز،ماجو کے شعبہ نفسیات کی سربراہ ڈاکٹر مریم حنیف غازی نے خطاب کیا۔اس موقع پردماغی امراض کا شکار افراد کی فلاح کیلئے کام کرنے والی متعدد این جی اوز کے ارکان بھی موجود تھے۔

(جاری ہے)

ڈاکٹر زبیر شیخ نے مزید کہا کہ بچوں کی نفسیات ہے کہ وہ منفی چیزوں کی جانب زیادہ راغب ہوتے ہیں،ہمارے ملک میں بچوں کی فلاح کے لئے کام کرنے والی این جی او زقابل تحسین ہیں۔مہمان خصوصی کلینیکل سائیکالوجسٹ پروفیسر روبینہ فیروز نے کہا کہ موجودہ ڈراموں کی وجہ سے نوجوان کئی نفسیاتی مسائل کاشکارہورہے ہیں۔ڈراموں میں غیر مساویانہ رویوں سے بچے ذہنی دباؤ کا شکار ہوجاتے ہیں جسے کنٹرول کرنے کی ضرورت ہے۔

شعبہ سائیکالوجی کی سربراہ ڈاکٹرمریم حنیف غازی نے کہا کہ ذہنی یا جسمانی معذوری کا شکار افراد کی تربیت کا کوئی خاص انتظام نہیں،انکی نفسیاتی تربیت بھی نہیں کی جاتی ایسے ہی افراد اور خاص طور پر بچوں کی مدد کیلئے ہم نے یہاں این جی اوز کو دعوت دی ہے۔آج ہمارے اس سیمینار میں کراچی ووکیشنل ٹریننگ سینٹر، کے ڈی ایس پی،پاکستان یوتھ فاؤنڈیشن،کراچی ڈاؤن سینڈروم، کارروان حیات،کاظم ٹرسٹ اور دیگراہم اداروں کے ذمہ داران شریک ہیں،عوام کو معلوم ہونا چاہیے کہ ان اداروں میں ذہنی صحت سے متعلق خدمات مفت فراہم کی جاتی ہیں۔

سیمینار میں مختلف این جی اوز نے آگہی کیلئے اسٹالز بھی لگائے تھے جن میں دیگر سرگرمیوں کے ساتھ بچوں کے مختلف ٹیسٹ بھی کروائے گئے جس کے بعد ان کی شخصیت کے بارے میں بتایاگیا

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments