پاک سرزمین پارٹی کے اعلی سطحی وفد کی جماعت اسلامی کے رہنمائوں سے ملاقات ، نئے بلدیاتی نظام کے حوالے سے رابطہ اور تفصیلی تبادلہ خیال

سندھ میں بلدیاتی قانون کالا قانون ہے، پیپلز پارٹی نے ووٹ سے کراچی تو حاصل کیا نہیں اب کالے قوانین کے زریعے فتح کرنے چلی ہے، شبیر قائم خانی

منگل 30 نومبر 2021 00:31

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 29 نومبر2021ء) پاک سرزمین پارٹی کے اعلی سطحی وفد کی ادارہ نور الحق میں جماعت اسلامی کے رہنمائوں سے ملاقات میں نئے بلدیاتی نظام کے حوالے سے رابطہ اور تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ پاک سر زمین پارٹی کے وفد نے جماعت اسلامی کو نئے بلدیاتی قانون پر اپنے شدید تحفظات سے آگاہ کیا۔ پاک سر زمین پارٹی کالے بلدیاتی قانون کی ہر سطح پر بھرپور مخالفت اور مزاحمت کرئے گی۔

اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے پی ایس پی کے وائس چیئرمینز ڈاکٹر ارشد وہرا اور شبیر قائم خانی کہا کہ پاک سر زمین پارٹی نے نئے بلدیاتی قانون کے خلاف تمام سیاسی جماعتوں سے رابطوں کا سلسلہ شروع کردیا ہے، اس سلسلے میں آج جماعت اسلامی کے رہنمائوں سے ملاقات کی گئی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ سندھ میں بلدیاتی قانون کالا قانون ہے، پیپلز پارٹی نے ووٹ سے کراچی تو حاصل کیا نہیں اب کالے قوانین کے زریعے فتح کرنے چلی ہے، ہم اس بلدیاتی بل پر سیاسی جماعتوں سے رابطہ کر رہے ہیں، اس بل کے بعد سندھ حکومت بلدیات پر اپنے تسلط کو مکمل کرنا چاہتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی ملک دشمن جماعت ہے،کوٹہ سسٹم کے نام پر سندھ کو تقسیم کیا گیا،پیپلز پارٹی نے شہری علاقوں کو اور دیہی علاقوں کو ہمیشہ لوٹا ہے،پاک سرزمین پارٹی خاموش نہیں بیٹھے گی،اس بل کے بعد کے ایم سی کے پاس کچھ نہیں بچتا،اسپتال سمیت جو بھی ادارے سندھ حکومت نے لیے وہاں کوئی بہتری نہیں ہے، انہوں نے کہا کہ ہماری کسی سے لڑائی نہیں ہے،جو کراچی کا درد رکھتے ہیں انکے پاس جائینگے،ایم کیو ایم وفاقی حکومت کا حصہ ہے،ایم کیو ایم اس جرم میں شریک ہے،پتنگ کے نام پر لوگوں نے بہت ووٹ دے دیا، اب نہیں دینگے،وفد میں پی ایس پی وائس چیئرمین ڈاکٹر ارشد وہرا، شبیر احمد قائم خانی ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات شمشاد صدیقی اور رکن نیشنل کونسل فرحان انصاری شامل تھے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments