شمال مشرقی و مغربی بلوچستان میں بارش برسانے والا نیا سسٹم داخل

وادی زیارت میں ایک انچ تک برفباری ہوئی ،وادی زیارت کی رابطہ سڑکیں پھسلن سے متاثر ہیں، نمک ڈالا جا رہا ہے، ڈپٹی کمشنر زیارت کراچی میں سردی کے ایک اور اسپیل کے آنے کا امکان پیدا ہوگیا، 22 اور 23 جنوری کو درجہ حرارت ایک بار پھر سے سنگل ڈجٹ میں جاسکتا ہے، ماہرین

پیر 17 جنوری 2022 15:50

کراچی /کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 17 جنوری2022ء) شمال مشرقی و مغربی بلوچستان میں بارش برسانے والا نیا سسٹم داخل ہوگیا۔ڈپٹی کمشنر زیارت حبیب ناصر کے مطابق وادی زیارت میں ایک انچ تک برفباری ہوئی ،وادی زیارت کی رابطہ سڑکیں پھسلن سے متاثر ہیں، نمک ڈالا جا رہا ہے۔ڈی سی قلعہ سیف اللہ حافظ قاسم کا کہنا ہے کہ کان مہترزئی، کنجوغی میں بھی برفباری ہوئی، کوئٹہ، ڑوب ہائی وے ، کان مہترزئی کیمقام پر آمدورفت بحال ہے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ بلوچستان کے بیشتر علاقوں میں بارش اور برفباری کا امکان ہے، بالائی علاقوں میں برفباری سے رابطہ سڑکیں متاثر ہونے کا امکان ہے ادھر کراچی میں سردی کے ایک اور اسپیل کے آنے کا امکان پیدا ہوگیا، 22 اور 23 جنوری کو درجہ حرارت ایک بار پھر سے سنگل ڈجٹ میں جاسکتا ہے۔

(جاری ہے)

ڈائریکٹر محکمہ موسمیات سردار سرفراز کا کہنا ہے کہ رواں ہفتے ملک بھر میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوگا، 21 اور 22 جنوری کو سکھر اور لاڑکانہ میں بارش ہوسکتی ہے۔

سردار سرفراز نے بتایا کہ کراچی میں بارش کا امکان فی الحال نہیں ہے تاہم 22 اور 23 جنوری کو شہر قائد کا درجہ حرارت ایک بار پھر سے سنگل ڈجٹ میں جاسکتا ہے۔ڈائریکٹر محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مری میں برفباری کا امکان ہے مگر یہ حالیہ برفباری جیسی نہیں ہوگی، خیبرپختونخوا، گلگت بلتستان اور شمالی بلوچستان میں بھی برفباری اور بارش کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

چیف میٹرولوجسٹ نی بتایا کہ مغربی ہوائوں کا سلسلہ افغانستان اور ایران میں موجود ہے اور یہ ایران کے راستے منگل کو بلوچستان میں داخل ہوگا، سلسلے کا پھیلائو شمالی بلوچستان تک آنے کے باعث گزشتہ رات کوئٹہ اور دیگر علاقوں میں بارش ہوئی ہے۔سردار سرفراز کے مطابق منگل کو یہ سلسلہ شمالی و وسطی بلوچستان میں بارش و برفباری کا باعث بنے گا،20 جنوری تک یہ سلسلہ ملک کے شمالی حصے پر بھی اثرانداز ہوگا۔

چیف میٹرولوجسٹ کے مطابق کراچی میں اس سلسلے کے باعث سردی کی شدت میں کمی کا امکان ہے، اس دوران کم سے کم درجہ 18 سے 20 ڈگری سینٹی گریڈ رہنے کا امکان ہے۔22 جنوری کو مغربی ہوائیں بلوچستان اور جنوبی پنجاب نکل جائیں گی،جس سے کراچی میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوسکتا ہیاور جنوری کے اختتام تک شہر میں سردی رہے گی۔دوسری جانب شمال مغربی بلوچستان میں ایک مرتبہ پھر بارش اور برف باری کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے، وادی زیارت اور کان مہتر زئی میں برفباری ہوئی ہے جبکہ پشین، خانوزئی، مسلم باغ اور سرانان میں بارش ہوئی ہے،اس کے علاوہ چمن اور گردو نواح میں گرد ا?لود طوفانی ہوائیں چلنے سے بجلی کی فراہمی میں خلل پیدا ہوا ہے۔

کراچی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments