اُردو پوائنٹ پاکستان لاہورلاہور کی خبریںنواز شریف کے ساتھی خود غرض نکلے 13 جولائی کو میں نے ن لیگی رہنما کو فون ..

نواز شریف کے ساتھی خود غرض نکلے

13 جولائی کو میں نے ن لیگی رہنما کو فون کیا کہ آپ کی ریلی ائیرپورٹ کی طرف کیوں نہیں جاتی تو انہوں نے کہا اس وقت میری ریلی میں جو 4 ہزار لوگ ہیں یہی میرے پولنگ ایجنٹ ہیں، اگر یہ ائیرپورٹ تک چلے گئے تو میں قومی اسمبلی کا الیکشن کیسے لڑوں گا، معروف صحافی حامد میر کی گفتگو

لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔22 جولائی 2018) سابق وزیراعظم نواز شریف کے ساتھی خود غرض نکلے۔ تفصیلات کے مطابق نواز شریف کا ائیرپورٹ کا استقبال اور ائیرپورٹ تک ن لیگ کے کارکنان کا نہ پہنچنا ابھی بھی زیر بحث ہے۔اسی متعلق گفتگو کرتے ہوئے معروف صحافی حامد میر کا کہنا تھا کہ 13جولائی کو میں نے ایک ن لیگی رہنما کو فون کیا کہ میں نے ابھی ٹی وی پر دیکھا ہے آپ کی ریلی تو ریگل چوک پر ہے ۔

آپ ائیرپورٹ تک کیوں نہیں جاتے ؟۔ تو ان کا کہنا تھا کہ حامد میر صاحب اس وقت میرے ساتھ چار پانچ ہزار لوگ ہیں اور یہی وہ لوگ ہیں جنھوں نے الیکشن میں میرا پولنگ ایجنٹ بننا ہے تو اگر میں ان کو ائیرپورٹ تک لے کر چلا گیا تو میں انتخاب کیسے لڑوں گا ؟۔جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ نواز شریف کے ساتھیوں نے بھی ان کو مشکل وقت میں اکیلا چھوڑ دیا تھا اور انہیں اپنے قائد نواز شریف کے استقبال کی نہیں بلکہ اپنے الیکشن کی فکر تھی۔

(خبر جاری ہے)

یاد رہے شہباز شریف کے ائیرپورٹ نہ پہنچ پانے پر کئی سوالات اٹھے تھے۔کچھ ناقدین کہہ رہے ہیں کہ سابق وزیر اعلیٰ نے جان بوجھ کر ائیرپورٹ جانے میں تاخیر کی۔ انہیں علم تھا کہ اگر وہ اس رفتار سے آگے بڑھے تو وہ وقت پر ائیرپورٹ نہیں پہنچ پائیں گے ۔اس کے باوجود شہباز شریف نے تاخیری حربوں سے کام لیا۔اس ناقص حکمت عملی کے بعد شہباز شریف کی صلاحیتوں پر بھی سوال اٹھنے لگے۔

سابق وزیر خارجہ اور لیگی رہنما خواجہ آصف نے شہباز شریف کا بھانڈا پھوڑ دیا تھا، خواجہ آصف نے اس بات کا انکشاف کیا تھا کہ کارکنان کو ائیر پورٹ کی کال دی گئی تھی مگر دو دن پہلے ہی یہ طے ہو گیا تھا کہ ہم نے ائیرپورٹ نہیں جانا بلکہ ریلی کو جوڑے پل سے بھی آگے نہیں لے کر جانا۔یہی سبب تھا کہ شہباز شریف سارا دن کارکنان کو لے کر لاہور کی سڑکوں پر پھرتے رہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

لاہور شہر کی مزید خبریں