اُردو پوائنٹ پاکستان لاہورلاہور کی خبریںپیپلز پارٹی نے ن لیگ کو دھوکہ دے دیا وزیراعظم کے انتخاب کے لئے پیپلز ..

پیپلز پارٹی نے ن لیگ کو دھوکہ دے دیا

وزیراعظم کے انتخاب کے لئے پیپلز پارٹی کا شہباز شریف کو ووٹ دینے کا امکان نہیں

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 15 اگست 2018ء) : قومی اخبار کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کا وزیراعظم کے انتخاب کے لیے شہباز شریف کو ووٹ نہ دینے کا امکان ہے۔لیکشن نتائج میں مبینہ طور پر بڑی انجینئرنگ اور دھاندلی الزامات کے بعد دونوں جماعتیں ایک ہوگئیں تھیں ۔جب کہ الائنس میں پاکستان مسلم لیگ (ن)پیپلز پارٹی ،ایم ایم اے ،اے این پی اور دیگر شامل ہوئے تھے ۔

ملیکن اب بتایا گیا ہے کہ ملک کے وزیراعظم کے لیے الیکشن میں پی پی کو شہباز شریف کو ووٹ دینے سے پیچھے ہٹا نظر آنے پر پاکستان مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے درمیان بنایا گیا پاکستان الائنش فار فری اینڈ فئیر الیکشن اتحاد اصل میں ختم ہو گیا ہے۔متعدد ملاقاتوں کے بعد دونوں میں اتفاق ہوا تھا کہ وہ وزیر اعظم ،اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کیلئے مشترکہ امیدوار میدان میں اتاریں گے ،جامع بات چیت اور اجلاسوں کے بعد اس پر اتفاق ہوا تھا کہ شہباز وزیر اعظم کیلئے ،خورشید شاہ اسپیکر اور ایم ایم اے کے مولانا اسد الرحمان ڈپٹی اسپیکر کیلئے امیدوار ہونگے ۔

(خبر جاری ہے)

یاد رہے مولانا اسد الرحمان مجمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے بیٹے ہیں۔ذرائع نے انکشاف کیا کہ جوائنٹ اے پی سی میں اعلان کردہ لفظ پر پی پی کی شیری رحمان نے ’جوائنٹ اپوزیشن ‘پر اعتراض اٹھایا اور فائنل ہوجانے پر اسے ’جوائنٹ اسٹریٹجی ‘سے بدل دیاگیا۔ جس سے ن لیگ میں بہت سے رہنما چونک گئے۔پاکستان پیپلز پارٹی میں شہباز شریف کو بطور وزیر اعظم لانے پر بہت تحفظات کا شکار ہے۔جس کی وجہ سے امکان پیدا ہو گیا ہے کہ اب پیپلز پارٹی ن لیگ کو وزیراعظم کے امیدوار کے لیے ووٹ نہیں دے گی۔یاد رہے پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے عمران خان کو بطور وزیراعظم نامزد کیا گیا ہے۔ووٹنگ کے عمل کے بعد عمران خان 18اگست کو اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

لاہور شہر کی مزید خبریں