اُردو پوائنٹ پاکستان لاہورلاہور کی خبریںگورنرہاؤس بارےعمران خان کاہرفیصلہ قبول، چوہدری سرور اپوزیشن مرکز ..

گورنرہاؤس بارےعمران خان کاہرفیصلہ قبول، چوہدری سرور

اپوزیشن مرکز اورصوبے میں تقسیم ہوچکی ہے، کر پشن ظلم اور ناانصافی کا خاتمہ اولین تر جیح ہوگی ،پی ٹی آئی وزیراعظم، وزراءاعلیٰ، گورنرز ، وزراء مشیر حکومتی عہدوں کا ذاتی مفادات کیلئے استعمال سوچ بھی نہیں سکتے۔نامزد گورنرپنجاب کی گفتگو


لاہور(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔16 اگست 2018ء): پاکستان تحر یک انصاف کے نامزد گورنر پنجاب سینیٹر چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ عوامی طاقت سے اقتدار میں آئے ہیں اب حقیقی معنوں میں قومی امنگوں کے مطابق عوامی حکومت قائم ہوگی، گورنر ہاؤس لاہور کے بارے عمران خان وزیر اعظم بننے کے بعد جو بھی فیصلہ کر یں گے اس پر عمل کیا جائیگا کیونکہ عمران خان کا ویژن ہی ہمارامشن ہے، اپوزیشن مر کز اور صوبے میں تقسیم ہو چکی ہے، کر پشن ظلم اور ناانصافی کا خاتمہ اولین تر جیح ہوگی ،تحر یک انصاف کا وزیر اعظم،وزراء اعلی، گورنرز ، وزراء اور مشیر حکومتی عہدے کو ذاتی مفادات کیلئے استعمال کا سوچ بھی نہیں سکتا ، پنجاب میں نئے دور کا آغاز ہونے جا رہا ہے جس میں لوگوں کو انکا حق ملے گا ۔

اپنے دفتر میں میڈیا کے مختلف نمائندوں اور پارٹی وفود سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے چوہدری محمد سرور نے کہا کہ ملک میں کر پشن ایک ناسو بن چکا ہے۔

(خبر جاری ہے)

جس ادارے میں چلے جائیں وہاں کرپشن اور سفارش چلتی ہے اور پیسے کے بغیر لوگوں کے کام نہیں ہوتے مگر اب نئے پاکستان میں ایسے تمام مظالم کا خاتمہ کر کے ملک میں حقیقی معنوں میں ایک عوامی اور جمہوری حکومت قائم ہوگی ۔

انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ اگر حکمران خود کر پشن کرتے ہیں تو پھر نیچے والے لوگوں کو بھی کر پشن کر نے کی جرات ہوتی ہے۔ مگر جب ملک میں عمران خان وزیر اعظم ہوں گے تو کوئی بھی کر پشن کر نے کے بارے میں سوچے گا بھی نہیں کیونکہ نئے پاکستان میں کر پشن کر نیوالوں کوانکے جرم کے سزا سالوں مہینوں نہیں دنوں میں ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے اپنا فیصلہ تحر یک انصاف کے حق میں سنا دیا ہے اس لیے جن کے پاس اپوزیشن کا مینڈیٹ ہے۔ وہ اپوزیشن کریں ہم ہر فورم پر ان کا سامنا کر یں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

لاہور شہر کی مزید خبریں