بابا کب آئیں گے ؟

ایس پی رورل پشاور طاہر داوڑ شہید کی ننھی بیٹی والد کا انتظار کرتی رہ گئی،تصویر نے سب کو آبدیدہ کر دیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان بدھ نومبر 13:44

بابا کب آئیں گے ؟
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔14نومبر2018ء) دو ہفتے قبل اسلام آباد تھانہ رمنا کی حدود سے اغوا ہونے و الے ایس پی رورل پشاور طاہر داوڑ کو شہید کردیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق طاہر داوڑ کی تشدد زدہ لاش بر آمد ہوئی ہے جسے مبینہ طور پر افغانستان کے صوبے ننگر ہار میں قتل کر دیا گیا ہے ۔ طاہر داوڑ کو دو ہفتے قبل اغوا کیا گیا تھا جس کے بعد سے ان کی بیٹی کی ایک تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس میں وہ اپنے بابا کی تصویر اٹھائے ان کی آمد کی منتظر ہے اور دعا کر رہی ہے کہ میرے بابا جلد گھر واپس لوٹ آئیں لیکن ننھی کلی اس ظالم دنیا سے واقف نہیں۔

داوڑ شہید کی ننھی بیٹی کی اس تصویر نے ہر دیکھنے والوں کو جذباتی کر دیا ہے۔سوشل میڈیا صارفین کا کہنا ہے کہ شہید کی بیٹی کے چہرے کے تاثرات سے واضح ہو رہا ہے کہ وہ اپنےو الد کو کتنا یاد کر رہی ہے۔

(جاری ہے)

ایک سوشل میڈیا صارف نے بیرونی مداخلت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کس قدر عجیب بات ہے کہ طاہر داوڑ کو اغوا کرنے کے بعد بری طرح سے قتل کر دیا گیا لیکن کوئی بھی نہیں بتا رہا ہے کہ آخر یہ کیسے ہوا؟۔

ایک صارف نے ٹویٹ کیا کہ
واضح رہے کہ شہید طاہر داوڑ لاش کیساتھ پشتو میں لکھا گیا کاغذ بھی لگایا گیا ہے جس میں طالبان نے ان کے قتل کی ذمہ داری قبول کر لی ہے کہ مقتول طاہر داوڑ فوج کا ساتھ دیکر مجاہدین کو قتل اور گرفتار کرتے تھے پاک افغان سرحد طورخم پر افغان سیکورٹی حکام نے پاکستانی پولیس آفیسر کی لاش ایف سی کے حوالے کردی اس حوالے سے پولیس کی جانب سے آفیشل خبر فی الحال سامنے نہیں آیا ہے۔

ایس پی رورل پشاور طاہر خان داوڑ کو 27اکتوبر کو اسلام آباد سے لاپتہ ہوگئے تھے۔ دوسری جانب طاہر خان داوڑ کے قتل کی تصاویرسوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوگئی ہیں۔ اس حوالے سے وزیرمملکت برائے داخلہ شہریار خان آفریدی نے صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ طاہر خان داوڑ کا معاملہ حساس ہے اس پر بات نہیں کرسکتے یہ نیشنل سیکیورٹی اور کسی کی زندگی کی بات ہے ۔اوپن فورم میں بات نہیں کی جاسکتی ،طاہر خان داوڑ کے لاپتہ ہونے کا مقدمہ اسلام آباد کے تھانہ اضا میں درج تھا۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments