پنجاب حکومت کی جانب سے ہٹائے جانے والے عمر سیف کے بارے میں انکشاف

سابق چئیرمین پی آئی ٹی بی ڈاکٹر عمر سیف اپنی ساری تنخواہ بے سہارا بچوں کے لیے عطیہ کیا کرتے تھے

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس اتوار نومبر 17:13

پنجاب حکومت کی جانب سے ہٹائے جانے والے عمر سیف کے بارے میں انکشاف
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار-18 نومبر 2018ء) :پنجاب حکومت کی جانب سے برطرف کئیے جانے والے سابق چئیرمین پی آئی ٹی بی ڈاکٹر عمر سیف اپنی ساری تنخواہ بے سہارا بچوں کے لیے عطیہ کیا کرتے تھے۔تفصیلات کے مطابق انفارمیشن ٹیکنالوجی کی دنیا کے بڑے نام اور سابق چئیرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ عمر سیف کے والد کرنل (ر) سیف نے بیٹے کی برطرفی پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تقسیم پاکستان کے وقت ہم ہندوستان سے پاکستان آئے ۔

ہم پر قاتلانہ حملے ہوئے مگر ہم نے اپنی جائے پناہ پاکستان کو ہی سمجھا۔انہوں نے بتایا کہ میرے والدین نے میری اچھی تربیت کی اور میں فوج میں ساری عمر خدمات سرانجام دے کر کرنل کے عہدے سے ریٹائرڈ ہوا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان سے محبت کی وجہ سے اللہ نے مجھے عمر سیف جیسا بیٹا عطا کیا۔

(جاری ہے)

انکا کہنا تھا کہ دنیا میں سالانہ ڈیڑھ لاکھ پی ایچ ڈی ہولڈر میں سے کوئی ایک بھی ایسا نہیں جو میرے بیٹے کا مقابلہ کر سکے۔

انہوں نے مزید بھی کہا کہ ڈاکٹر عمر سیف کو ملکی خدمات کے بدلے میں مایوسی ہی نہیں ملی۔انکا کہنا تھا کہ میرا بیٹا ان تمام باتوں کے باوجود پاکستان سے جانے کے لیے تیار نہیں ہے۔انکا بتانا تھا کہ جب سے ڈاکٹر عمر سیف کو عہدے دے ہٹایا گیا ہے متعدد غیر ملکی سفیروں نے انکے گھر کا رخ کرلیا ہے ۔متعدد ممالک انکو وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کا قلمدان سونپنے کے لیے تیار ہیں جبکہ بل گیٹس انکو ایک گھنٹے کی کنسلٹنسی کے عوض 10 ہزار ڈالر تک کا معاوضہ دینے کو راضی ہیں ۔

تاہم ان کے والد کا بتانا تھا کہ عمر سیف پاکستان چھوڑ کر جانا نہیں چاہتا اور یہیں رہ کر اپنے ملک کی خدمت کرنا چاہتا ہے۔انہوں نے اپنے انٹریو کے دوران یہ بھی بتایا کہ میرا بیٹا میرٹ پر چئیرمین نادرا کے لیے اہل تھا مگر اسکی جگہ سیاسی تعیناتی کی گئی۔چوہدری نثار نے نواز شریف پر دباو ڈال کر اپنی مرضی کا چئیرمین نادرا لگوایا۔انہوں نے کہا کہ اسی طرح سابق حکومت نے میرٹ سے ہٹ کر انوشہ رحمان کو انفارمیشن ٹیکنالوجی کا وزیر بنایا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں عمر سیف کی طرح اور بھی متعدد آئی ٹی ایکسپرٹ موجود ہیں مگر وہ حکومت کے رویے نالاں ہیں۔انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ڈاکٹر عمر سیف بطور چئیرمین پی آئی ٹی بی جو تنخواہ لیتے تھے وہ خود استعمال نہیں کرتے تھے بلکہ وہ اپنی ساری تنخواہ بے سہارا بچوں کے لیے قائم این جی او ایس او ایس کو دیتے تھے جو اس رقم کو بے سہارا بچوں کی فلاح و بہبود کے لیے استعمال کرتے تھے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments