وزیراعلیٰ پنجاب کی زیرصدارت اجلاس ، عوامی فلاح و بہبود کے زیرتکمیل پروگراموں پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا

پیر اگست 18:51

وزیراعلیٰ پنجاب کی زیرصدارت اجلاس ، عوامی فلاح و بہبود کے زیرتکمیل ..
لاہور۔19 اگست(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 19 اگست2019ء) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیرصدارت90شاہر اہ قائداعظم پر جائزہ اجلاس منعقد ہوا ،جس میں نیا پاکستان منزلیں آسان ،کمیونٹی ڈویلپمنٹ پروگرام اوردیگر عوامی فلاح و بہبود کے زیرتکمیل پروگراموں پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت پراجیکٹس پر پیش رفت اوردیگرانتظامی و مالی امور کابھی جائزہ لیا گیا۔

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صرف ایک سال میں پنجاب کے سرکاری ہسپتالوں میں 8350بیڈز کا اضافہ کیاگیا ہے۔سرکاری ہسپتالوں میں بیڈز کی تعداد بڑھنے سے عوام کو علاج معالجے کی معیاری سہولت میسر ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ ،میانوالی کے ہسپتال اورملتان میں نشتر ٹو جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ سروسز ہسپتال کی ایمرجنسی کی اپ گریڈیشن ایک سال میں مکمل کی جائے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہا کہ پنجاب میں 4 نئی یونیورسٹیاں بنیںگی اور6 زیر تکمیل یونیورسٹیاں جلد مکمل کی جائیںگی جبکہ صوبہ بھر میں سپیشل ایجوکیشن کی10نئے سینٹرز قائم کیے جارہے ہیں ۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ کاشتکاروں کی سہولت کیلئے کثیر الجہتی کریڈٹ کارڈ سکیم جلد از جلد شروع کی جائے گی ۔پنجاب میں واٹر اورہل ٹورازم کے فروغ کیلئے 1.5ارب روپے مختص کیے گئے ہیں ۔

بہاولپور میں ڈبل ڈیکر بس سروس کا اجراء یقینی بنایا جائے گا۔فیصل آباد ، تونسہ اورمظفرگڑھ میں انڈسٹریل سٹیٹس کے منصوبے شروع کیے جائیں گے۔’’ہنر مند نوجوان پروگرام‘‘ کے تحت 40ہزار طلباء کو ٹیوٹا کے اداروں میں ٹیکنیکل ایجوکیشن دی جائے گی۔انہوںنے کہا کہ کمیونٹی ڈویلپمنٹ پروگرام کے فیز ون اورٹو میں 1733ترقیاتی منصوبے شامل ہیں جو15.9ارب روپے کی لاگت سے مکمل ہوںگے۔

’’نیا پاکستان منزلیں آسان ‘‘ کے تحت 174سڑکوں کی تعمیر و مرمت ہوگی۔70ارب روپے کی لاگت سے 485کلو میٹر سڑکیں بنائی جارہی ہیں ۔انہوںنے کہا کہ چیچہ وطنی رجانہ،لیہ تونسہ،شورکوٹ جھنگ،حاصل پور بہاولنگراوردیپالپوروہاڑی کی سڑکیں بننے سے عوام کو آمدورفت میں سہولت ہوگی۔تعلیم ،صحت سمیت 8پبلک سیکٹرکے منصوبوں کیلئے گائیڈ لائن دی جاچکی ہے ۔

صوبہ بھر میں 5277سکیمیں11ارب 40کروڑ روپے کی لاگت سے مکمل کی جائیں گی۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کی منظوری کے طریقہ کارکو آسان اورمختصر بنایا جائے ۔پراجیکٹس کی منظوری میں غیر ضروری تاخیرگوارا نہیں ۔ ترقیاتی منصوبوں کے لئے ارکان اسمبلی کی مشاورت کو ترجیح دی جائے ۔وزیراعلیٰ کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ ورلڈ بینک اوردیگر عالمی مالیاتی ادارے پنجاب میں ترقیاتی منصوبوں کے لئے مالی معاونت فراہم کریںگے۔صوبائی وزراء ہاشم جواں بخت، سردار آصف نکئی، صوبائی مشیر ڈاکٹر سلمان شاہ، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، پرنسپل سیکرٹری وزیراعلیٰ، متعلقہ سیکرٹریز اور سپیشل مانیٹرنگ یونٹ کے سربراہ نے اجلاس میں شرکت کی۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments