5 افغانیوں کے پیٹ سے 32 کروڑ روپے کی ہیروئن برآمد

ہیروئن اسمگل کر کے ڈالر کمانے کے چکر میں جیل پہنچ گئے

Sajjad Qadir سجاد قادر اتوار ستمبر 06:40

5 افغانیوں کے پیٹ سے 32 کروڑ روپے کی ہیروئن برآمد
لاہور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 ستمبر2019ء)   جو کام کوئی بھی نہ کر سکے وہ پہاڑوں میں رہنے والے سخت جان لوگ ضرور کر لیتے ہیں۔پٹھان قوم اپنی بہادری،دلیری اور وعدہ پورا کرنے کے حوالے سے ساری دنیا میں مشہور ہے مگر اسی چکر میں بعض اوقات وہ کوئی ایسا کام بھی کر ڈالتے ہیں کہ جس سے لینے کے دینے پڑ جاتے ہیں۔یہی وجہ ہے کہ محض500ڈالر کے عوض 5افغانی جیل چلے گئے۔

ہوا کچھ یوں کہ انہیں افغانستان سے بھارت کے شہر دہلی ہیروئن پہنچانے کے لیے500ڈالر کی پیشکش کی گئی جو انہوں نے خوش دلی سے قبول کر لی مگر دہلی ایئرپورٹ پر پہنچتے ہی پولیس کے ہتھے چڑھ گئے۔دی ہندوستان ٹائمز میں شائع رپورٹ کے مطابق کسٹم حکام نے بتایا کہ زیرحراست افغانی باشندے گزشتہ ہفتے قندھار سے نئی دہلی پہنچے تھے۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ حراست میں لینے کے بعد انہیں ہسپتال منتقل کیا گیا اور ہیروئن سے بھرے کیپسولز کو نکالنے میں مجموعی طور پر 5 دن لگے۔

ڈپٹی کمشنر کسٹم کلریو میشرہ نے بتایا کہ ’برآمد ہونے والی ہیروئن کا کل وزن 4 کلو گرام تھا جس کی قیمت تقریباً 15 کروڑ بھارتی کرنسی بنتی ہے۔کسٹم حکام کے مطابق افغان باشندوں کو گزشتہ ہفتے شام ساڑے چھ بجے حراست میں لیا گیا جب وہ قندھار سے آئی جی آئی ایئرپورٹ کے ٹرمینل 3 پر پہنچے۔حکام نے بتایا کہ انہیں خفیہ اطلاع تھی کہ افغان باشندے اسمگلنگ کی کوشش کریں گے۔

کسٹم حکام نے بتایا کہ ’افغان باشندوں کی آمد پر شبہ ہوا کہ وہ سونا اسمگلنگ کررہے ہیں تاہم ان کے دستی بیگ کی تلاشی لی گئی لیکن کچھ نہیں ملا بعدازاں خصوصی اجازت کے بعد انہیں ہسپتال میں پہنچایا گیا جہاں ان کا تفصیلی طبی معائنہ ہوا۔کسٹم افسرنے بتایا کہ ایکسرے رپورٹ میں پانچوں افغان باشندوں کے پیٹ میں کیپسول کی نشاندہی ہوئی تو انہیں نکالنے کا عمل شروع ہوا جس میں 5 دن لگے اور اس دوران سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے۔

بتایا گیا کہ کم از کم 370 کیپسول برآمد ہوئے جنہیں لیباٹری میں بھیج دیا گیا اور جب انہیں کھولا گیا تو ہیروئن نکلی۔بعدازاں زیر حراست افغان باشندوں نے تفتیش کاروں کو بتایا کہ دہلی میں مطلوبہ شخص کو کیپسول فراہم کرنے پر انہیں 500 ڈالر دینے کا وعدہ کیا گیا تھا۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments