آمدن سے زائد اثاثے،نیب کارانا ثنااللہ کے خلاف شواہد حاصل کر نے کادعویٰ

نیب نے عدم تعاون پر رانا ثناء اللہ کی گرفتاری کیلئے وارنٹ لاہور ہائیکورٹ میں جمع کروا دیے،16 دسمبر کو سماعت ہو گی

ہفتہ دسمبر 17:38

آمدن سے زائد اثاثے،نیب کارانا ثنااللہ کے خلاف شواہد حاصل کر نے کادعویٰ
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 05 دسمبر2020ء) قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور نے پاکستان مسلم لیگ نواز کے رہنما رانا ثناء اللہ کیخلاف 14 کروڑ سے زائد کے اثاثہ جات کے شواہد حاصل کر لیے ہیں۔ نجی ٹی وی نے رپورٹ میں بتایا کہ نیب دستاویزات کے مطابق لیگی رہنما بطور صوبائی وزیر چار سال میں 26 کروڑ 38 لاکھ 94 ہزار کی جائیدادیں بنائیں۔نیب دستاویزات کے مطابق 2013 تا 2017 کے درمیان رانا ثناء اللہ نے وزیر قانون پنجاب ہوتے ہوئے 1 سو 68 پلاٹ اور دو فارم ہاوسز خریدے۔

نیب دستاویزات میں دعویٰ کیا گیا کہ رانا ثنا ء اللہ کو پانچ مرلے کا گھر اور دس کنال زرعی زمین صرف وراثت میں ملی، انہوں نے اپنی جائیداد کی مالیت 10 کروڑ 98 لاکھ 31 ہزار 500سو ظاہر کی ہے جبکہ حقیقی مالیت 14 کروڑ 67 لاکھ 16 ہزار روپے ہے، چھ پراپرٹیز کی مالیت کا تاحال تعین نہیں ہو سکا ہے۔

(جاری ہے)

رانا ثناء اللہ نے نیب کی رپورٹ پر ردعمل میں کہا ہے کہ جتنے کروڑ کا الزام لگایا جا رہا ہے، اس سے زیادہ آمدن ہے، تمام اثاثے ظاہر کر چکا ہوں۔

رانا ثناء اللہ کے مطابق نیب نے پہلے کہا کہ اسٹریلیا میں دو ارب کی جائیدادیں ہیں، وہ بتائیں کہاں ہیں سب اثاثوں کی تفصیلات ریکارڈ پر موجود ہیں۔خیال رہے کہ نیب نے عدم تعاون پر رانا ثنائ اللہ کی گرفتاری کیلئے وارنٹ لاہور ہائیکورٹ میں جمع کروا دیے ہیں جس پر 16 دسمبر کو سماعت ہو گی۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments