پولیس میں بھرتیوں کے تحریری امتحان کے دوران کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد یقینی بنا یا جائے ،فیس ماسک، ہینڈ سینیٹائزز ، گلوز ، حفاظتی کٹس سمیت دیگر سامان کے استعمال اور احتیاطی تدابیر کا خاص خیال رکھا جائے،آئی جی پنجاب

ہفتہ دسمبر 17:46

پولیس میں بھرتیوں کے تحریری امتحان کے دوران کورونا ایس او پیز پر عمل ..
لاہور۔5دسمبر  (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 05 دسمبر2020ء) :انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی نے کہاہے کہ پنجاب پولیس کو اس وقت 15 ہزار کے قریب اہلکاروں کی کمی کا سامنا ہے، اہلکاروں کی کمی کی وجہ سے عوام کی جان و مال کے تحفظ کے عمل اور دیگرپیشہ ورانہ فرائض کی انجام دہی میں شدید مشکلات پیش آرہی تھی ،شہریوں کی حفاظت اور وسیع تر قومی مفاد میں حکومت سے منظوری کے بعد بھرتیوں کا عمل شروع کیا گیا ،ایک ماہ قبل شروع ہونے والی بھرتی میں صرف تحریری امتحان کا آخری مرحلہ باقی ہے جو آ ج6دسمبر کو مکمل ہو جائے گاجبکہ بھرتی کے مراحل کامیابی سے مکمل کرنے والے اہلکارٹریننگ مکمل کرکے لگ بھگ ایک برس کے بعد محکمہ پولیس کا حصہ بنیں گے، صوبے کے مختلف اضلاع میں جاری پولیس بھرتیوں کے تحریری امتحان کے دوران کورونا سے بچائو کے ایس او پیز پر عمل درآمدکومکمل ذمہ داری اور سختی کے ساتھ یقینی بنایا جائے اورسپر وائزری افسران و اہلکار اور دیگرسٹاف نہ صرف احتیاطی تدابیر کی خود پاسداری کریں بلکہ تحریری امتحان کیلئے آئے امیدواروں سے بھی انسداد کورونا کے حوالے سے جاری ہدیات پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے ۔

(جاری ہے)

یہ ہدایات انہوں نے صوبے کے تمام آر پی اوز، سی پی اوز اور ڈی پی اوز کے نام جاری وائر لیس پیغام میں جاری کی ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ دوران امتحان فیس ماسک، ہینڈ سینیٹائزز ، گلوز ، حفاظتی کٹس سمیت دیگر سامان کے استعمال اور احتیاطی تدابیر کا بطور خاص خیال رکھا جائے جبکہ ایس او پیز کی پابندی نہ کرنے والوں کے خلاف ضابطے کی کارروائی میںہرگز تاخیرنہ کی جائے ۔

آئی جی پنجاب نے افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ پولیس لائنز، تھانوں،دفاتر اور فیلڈ ڈیوٹی پر تعینات افسران و اہلکار جاری کردہ کورونا ایڈوائزری کی ہدایات پر عمل درآمد میں کسی قسم کی کوتاہی نہ برتیں اور اپنے فرائض ہائی الرٹ ہوکر سر انجام دیں تاکہ وہ خود بھی موذی وبا سے محفوظ رہیں اور دوسروں کے تحفظ کا فریضہ عمدگی سے نبھا سکیں ۔ انہوں نے مزیدکہاکہ کمانڈ افسران اس حوالے سے مانیٹرنگ اور انسپکشن کا عمل بھی جاری رکھیں اور فورس کو دوران ڈیوٹی حفاظتی سامان کی فراہمی میں کوئی تعطل یا تاخیرنہ آنے پائے ۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments