بہت شرمندہ ہوں،بہک گیا تھا،ویڈیو وائرل ہونے کے بعد خوف اور پریشانی کا شکار ہوگیا

طالبعلم کو پاس کرنے کا جھانسہ دے کر ہوس کا نشانہ بنایا، ملزم مفتی عزیزالرحمٰن کا اعتراف جرم

Sajjad Qadir سجاد قادر منگل 22 جون 2021 07:49

بہت شرمندہ ہوں،بہک گیا تھا،ویڈیو وائرل ہونے کے بعد خوف اور پریشانی ..
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 22 جون 2021ء )  طالبعلم سے زیادتی میں ملوث ملزم عزیز الرحمان نے اعتراف جرم کرلیا۔پولیس کے مطابق عزیز الرحمان نے دوران تفتیش اعتراف جرم کیا اور ملزم نے اپنا بیان ریکارڈ کرادیا۔پولیس کے مطابق ملزم نے بیان میں کہا یہ ویڈیو میری ہی ہے جو صابر شاہ نے چھپ کر بنائی، طالبعلم صابر کو پاس کرنے کا جھانسہ دے کر ہوس کا نشانہ بنایا اور ویڈیو وائرل ہونے کے بعد خوف اور پریشانی کا شکار ہوگیا تھا۔

ملزم عزیز الرحمان نے اعترافی بیان میں کہا کہ بیٹوں نے صابر شاہ کو دھمکایا اور اسے کسی سے بات کرنے سے روکا، صابر شاہ نے منع کرنے کے باوجود ویڈیو وائرل کردی، میں مدرسہ چھوڑنا نہیں چاہتا تھا اس لیے ویڈیو بیان جاری کیا جب کہ مدرسے کے منتظمین اور مہتمم ویڈیو کے بعد مدرسہ چھوڑنے کا کہہ چکے تھے۔

(جاری ہے)

ملزم کے مطابق مقدمہ درج ہونے کے بعد ٹاؤن شپ، شیخوپورہ اور فیصل آباد میں شاگردوں کے پاس ٹھہرتا رہا، میری اور بیٹوں کی فون لوکیشن ٹریس ہوتی رہی، اس دوران میانوالی میں چھپا ہواتھا کہ پولیس نے گرفتار کرلیا۔

ملزم نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ اپنے کیے پر بہت شرمندہ ہوں اور بھٹک گیا تھا۔خیال رہے کہ ملزم مفتی عزیزالرحمان پر طالبعلم سے زیادتی کا الزام ہے، مفتی عزیز الرحمان کی طالبعلم سے زیادتی کی ویڈیو منظر عام پر آئی تھی، ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد صدر پولیس نے مفتی عزیز الرحمان کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔طالبعلم سے زیادتی کے واقعہ کے بعد مفتی عزیز الرحمان کو مدرسے سے نکال دیا گیا تھا جبکہ ویڈیو اسکینڈل منظر عام پر آنے کے بعد جمعیت علما اسلام نے بھی مفتی عزیز کی رکنیت معطل کر دی تھی۔

 مفتی عزیز الرحمٰن کے گرفتار ہونے پر آئی جی ہبجاب نے بھی بیان  دیا تھا کہ یہ ہمارے لیے ایک ٹیسٹ کیس ہے اور سپیڈی ٹرائل کے ساتھ اسے نبٹانے کی کوشش کریں گے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments