وزیراعلیٰ کی پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف لینگویج، آرٹس اینڈ کلچر آمد، عشرہ شان رحمت اللعالمینؐ کی مناسبت سے کیلی گرافی نمائش کا افتتاح کیا

پاکستان کیساتھ ایران کے آرٹسٹوں کے فن پارے بھی نمائش میں رکھے گئے، نمائش میں 100 سے زائد کیلی گرافی فن پارے رکھے گئے ہیں

بدھ 20 اکتوبر 2021 22:40

وزیراعلیٰ کی پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف لینگویج، آرٹس اینڈ کلچر آمد، عشرہ شان رحمت اللعالمینؐ کی مناسبت سے کیلی گرافی نمائش کا افتتاح کیا
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 20 اکتوبر2021ء) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے 12 ربیع الاول کے روز قذافی سٹیڈیم میں پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف لینگویج، آرٹس اینڈ کلچر (PILAC) کا دورہ کیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے عشرہ شان رحمت اللعالمینؐ کی مناسبت سے انسٹی ٹیوٹ میں کیلی گرافی نمائش کا افتتاح کیا۔ پاکستان کے ساتھ ایران کے آرٹسٹوں کے فن پارے بھی نمائش میں رکھے گئے ہیں۔

نمائش 30 ربیع الاول تک جاری رہے گی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کیلی گرافی کے خوبصورت فن پارے دیکھے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے خطاطی کے خوبصورت فن پاروں میں دلچسپی کا اظہار کیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے خط کوفی میں ایران کے آرٹسٹوں کے فن پاروں کی تعریف کی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے خطاط کے فن کو سراہا۔

(جاری ہے)

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے نامور مصور اسلم کمال کی میورل پینٹنگ کا افتتاح بھی کیا۔

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے میورل پینٹنگ میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا اور اسلم کمال کے تخلیقی فن کو سراہا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو ایک آرٹسٹ نے کلمہ طیبہ لکھ کر پاکستان کے نقشے کی تصویر پیش کی۔ پاکستان کا نقشہ بنانے کی تصویر میں 1443 بار کلمہ طیبہ لکھا گیا ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے آرٹسٹ کے فن کی تعریف کی اور ان کے کام کو سراہا۔

نوجوان آرٹسٹ نے وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی منفرد انداز میں بنائی تصویر وزیراعلیٰ کو پیش کی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ کیلی گرافی قدیم اسلامی روایت ہے۔ مسلمانوں نے کیلی گرافی میں نمایاں مقام حاصل کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت کیلی گرافی کے فروغ کیلئے نوجوان خطاط کی حوصلہ افزائی کر رہی ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف لینگویج، آرٹس اینڈ کلچر کے مختلف شعبوں کا بھی دورہ کیا۔ صوبائی وزیر ثقافت خیال احمد کاسترو، سیکرٹری اطلاعات، ڈی جی پلاک، ڈی جی پی آر اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments