آصف زرداری کی جیالوں کواین اے133 کےانتخابی معرکے کی بھرپور تیاری کی ہدایت

جیالے تمام اختلافات بھلا کر ضمنی الیکشن کی تیاری کریں، پارٹی امیدوار کا اعلان 24 گھنٹے میں کر دیا جائے گا،آئین وقانون کی بالا دستی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرے گی۔ سابق صدر آصف زرداری کی رہنماؤں سے گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ 22 اکتوبر 2021 23:41

آصف زرداری کی جیالوں کواین اے133 کےانتخابی معرکے کی بھرپور تیاری کی ہدایت
کراچی (اُردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 22 اکتوبر2021ء) پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر مملکت آصف زرداری نے پارٹی کارکنوں کواین اے133 کا انتخابی معرکہ لڑنے کیلئے تیاری کی ہدایت کردی، انہوں نے کہا کہ کارکن تمام اختلافات بھلا کر ضمنی الیکشن کی تیاری کریں، پارٹی امیدوار کا اعلان 24 گھنٹے میں کر دیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر مملکت آصف زرداری سے پیپلز پارٹی وسطی پنجاب اور لاہور کے عہدیداروں نے ملاقات کی۔

ملاقات میں راجہ پرویز اشرف، حسن مرتضیٰ، شہزاد سعید چیمہ اور اسلم گل شریک تھے۔ اس موقع پر آصف زرداری نے پارٹی عہدیداروں کو این اے 133 کا انتخابی معرکہ لڑنے کیلئے تیاری کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ این اے 133میں پیپلز پارٹی کے امیدوار کا اعلان 24 گھنٹے میں کر دیا جائے گا، پیپلز پارٹی این اے 133 کا انتخابی معرکہ بھر پور طریقے سے لڑے گی، کارکن تمام اختلافات بھلا کر پر عزم طریقے سے ضمنی الیکشن کی تیاری کریں۔

(جاری ہے)

آصف زرداری نے کہا کہ پیپلزپارٹی آئین وقانون کی بالا دستی اور جمہوریت کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرے گی۔ دوسری جانب وزیراعظم کے معاون خصوصی جمشید چیمہ اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے،وزیر اعظم عمران خان نے معاون خصوصی فوڈ سکیورٹی جمشید اقبال چیمہ کو این اے 133 میں ضمنی الیکشن لڑنے کیلئے پارٹی امیدوار نامزد کردیا ہے۔ جس پر جمشید اقبال چیمہ نے معاون خصوصی کے عہدے سے استعفا دے دیا ہے، جمشید چیمہ بطورجلد باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت تحریک انصاف کے امیدوار حلقے میں انتخابی مہم شروع کررہے ہیں، اس دوران جمشیدچیمہ نے حلقے میں اپنے حمایتی دھڑوں کی حمایت کیلئے ملاقاتیں بھی شروع کردی ہیں۔

واضح رہے مسلم لیگ ن کے ایم این اے پرویز ملک کے انتقال کے باعث یہ نشست خالی ہوئی ہے، 2018 میں اس حلقے سے پی ٹی آئی رہنماء اعجاز چوہدری نے الیکشن لڑا تھا۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments