فیصل آباد میں چوری کے شبہ میں خواتین پر تشدد، ملزمان نے برہنہ کرکے ویڈیوز بنائیں

پولیس نے خواتین پر تشدد اور برہنہ کرنے کے الزام میں 5 افراد کو گرفتار کر لیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان منگل 7 دسمبر 2021 11:41

فیصل آباد میں چوری کے شبہ میں خواتین پر تشدد، ملزمان نے برہنہ کرکے ویڈیوز بنائیں
فیصل آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 07 دسمبر 2021ء) : تھانہ ملت ٹاؤن میں چوری کے الزام میں خواتین پر تشدد کرنے اور برہنہ کرکے ویڈیو بنانے والے 5 افراد کو گرفتار کر لیا، ملزمان نے خواتین کو برہنہ کرکے ویڈیوز بنائیں۔تفصیلات کے مطابق فیصل آباد کے علاقے ملت ٹاؤن میں کاغذ چننے والی خواتین پر مشتعل افراد نے تشدد کیا اور برہنہ کرکے ویڈیوز بھی بنائیں۔

پولیس ترجمان کے مطابق متاثرہ خواتین کی جانب سے پولیس کو دی گئی درخواست میں بتایا گیا کہ وہ ملت ٹاؤن کے علاقے میں کاغذ چننے کے لیے گئی تھیں جہاں خواتین پانی پینے کے لیے ایک الیکٹرک اسٹور میں داخل ہوئیں۔پولیس کے مطابق خواتین نے بتایا کہ الیکڑک سٹور کے مالک صدام اور تین ملازمین نے اُنہیں چوری کے الزام میں محبوس بنا لیا اور انہیں تشدد کا نشانہ بناتے رہے۔

(جاری ہے)

اس دوران مزید افراد بھی وہاں آ گئے اور تشدد کے دوران انہیں دکان سے باہر بازار میں لے گئے جہاں ان پر تشدد کیا گیا۔ملزمان نے خواتین کو برہنہ کرکے ویڈیوز بھی بنائیں۔پولیس کے مطابق مقامی افراد کی جانب سے اطلاع ملنے پر کارروائی کرکے الیکٹرک اسٹور کے مالک سمیت تین ملزمان کو حراست میں لے لیا۔جب کہ سی پی او فیصل آباد کے حکم پر خواتین کو محبوس بنانے اور تشدد کے الزام میں چار نامزد اور 8 نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ بھی درج کر لیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق اب تک اس واقعے میں گرفتار ملزمان کی تعداد 5 ہو چکی ہے۔دوسری جانب ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہو چکی ہے جس پر صارفین کی جانب سے سخت برہمی کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ اور ملزمان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کرنے کی بھی  درخواست کی جا رہی ہے۔صارفین نے سوشل میڈیا سے خواتین کی ویڈیوز ہٹانے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments