لاہور ہائی کورٹ نے غیرت کے نام پر بیٹی کے قتل کے ملزم کی درخواست ضمانت خارج کردی

غیرت کے نام پر قتل افسوس ناک ہے ، اس جرم میں ضمانت کے لیے صرف صلح کافی نہیں‘عدالت

جمعہ جنوری 15:51

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔یکم جنوری۔2016ء) لاہور ہائی کورٹ نے غیرت کے نام پر بیٹی کے قتل کے ملزم کی درخواست ضمانت خارج کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ غیرت کے نام پر قتل افسوس ناک ہے ، اس جرم میں ضمانت کے لیے صرف صلح کافی نہیں ۔

(جاری ہے)

فیصل آباد کے غلام یاسین نے مبینہ طور پر غیرت کے نام پر اپنی بیٹی شاہدہ کو قتل کر دیا تھا،گزشتہ روز ملزم کی جانب سے درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ نے قرار دیا کہ غیرت کے نام پر بڑھتی ہوئی قتل و غارت افسوس ناک ہے ۔ریاست اور معاشرے کے خلاف کسی جرم میں ضمانت کے لیے صرف صلح کافی نہیں۔عدالت نے ریمارکس دئیے کہ 2004 میں قوانین میں ترمیم ہو چکی ہے ، اس جرم میں صلح مخصوص شرائط اور ٹرائل کورٹ کی اجازت کے بغیر نہیں ہو سکتی۔

متعلقہ عنوان :

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments