زمبابوے سیریز کے لیے میچ آفیشلز کا اعلان

تیس اکتوبر سے دس نومبر تک جاری رہنے والی سیریز کے کُل چھ میں سے پانچ میچوں میں علیم ڈار آن فیلڈ امپائرنگ کے فرائض انجام دیں گے

منگل اکتوبر 21:23

زمبابوے سیریز کے لیے میچ آفیشلز کا اعلان
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 20 اکتوبر2020ء) پاکستان اور زمبابوے کے خلاف 3 ایک روزہ اور 3 ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچوں کے لیے میچ آفیشلز کا اعلان کردیا گیا ہے۔ تیس اکتوبر سے دس نومبر تک جاری رہنے والی سیریز کے کُل چھ میں سے پانچ میچوں میں علیم ڈار آن فیلڈ امپائرنگ کے فرائض انجام دیں گے۔ آئی سی سی مینز کرکٹ ورلڈکپ سپر لیگ میں شامل تین ایک روزہ انٹرنیشنل میچوں کی سیریز راولپنڈی جبکہ تین ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچوں پر مشتمل سیریز لاہور میں کھیلی جائے گی۔

تین مرتبہ آئی سی سی امپائر آف دی ائیر کا اعزاز اپنے نام کرنے والے پاکستانی امپائر علیم ڈار اس وقت آئی سی سی ایلیٹ پینل برائے امپائرز میں شامل ہیں۔ انہیں سیریز میں شامل تین ایک روزہ انٹرنیشنل میچوں سمیت پہلے اور تیسرے ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچز کے لیے آن فیلڈ امپائر مقرر کیا گیا ہے جبکہ دوسرے ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچ میں وہ تھرڈ امپائر کی حیثیت سے ذمہ داریاں نبھائیں گے۔

(جاری ہے)

آئی سی سی نے پروفیسر جاوید ملک کو اس سیریز کے لیے میچ ریفری مقرر کیا ہے۔ وہ آئی سی سی کے انٹرنیشنل پینل آف امپائرز کا حصہ ہیں۔ سیریز کے دوسرے ٹی ٹونٹی میچ میں آن فیلڈ امپائر کی ذمہ داریاں سنبھالنے والے احسن رضا کا یہ 50 واں ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچ ہوگا، وہ ٹی ٹونٹی کرکٹ میں یہ اعزاز حاصل کرنے والے پہلے امپائر بن جائیں گے۔ اس فہرست میں علیم ڈار کا نمبر دوسرا ہے۔

وہ 46 میچوں میں یہ ذمہ داریاں ادا کرچکے۔ شوزب رضا اور جنوبی افریقہ کے شان جارج 36، 36 میچوں کے ساتھ اس فہرست میں چوتھے نمبر پر موجود ہیں۔ سابق فرسٹ کلاس کرکٹر، احسن رضا نے فروری 2010 میں شارجہ کرکٹ گراؤنڈ میں افغانستان اورکینیڈا کے خلاف ون ڈے میچ سے اپنے امپائرنگ کیرئیر کا آغاز کیا۔اسی سال انہوں نے اکتوبر میں ابوظہبی میں کھیلے گئے پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچ سے اس فارمیٹ کے سفر کا آغاز کیا۔

46 سالہ امپائر اب تک مجموعی طور پر 85 انٹرنیشنل میچوں میں یہ فرائض انجام دے چکے ہیں۔ پاکستان اور زمبابوے کے مابین سیریز کے لیے آئی سی سی کی عبوری پلیئنگ کنڈیشنز کے تحت کسی بھی کھلاڑی کو تھوک سے گیند کو چمکانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ اگر کوئی کھلاڑی تھوک سے گیند کو چمکاتا ہے تو ابتدائی طو رپر امپائر تھوڑی نرمی کا مظاہرہ کرے گا تاہم اگلی خلاف ورزی پر مذکور ٹیم کو انتباہ جاری کردیا جائے گا۔

ایک ٹیم کو دومرتبہ وارننگ جاری کی جاسکتی ہے، جس کے بعد گیند کو تھوک سے چمکانے پر بیٹنگ سائیڈ کو پنالٹی کے طور پر 5 اضافی رنز دے دئیے جائیں گے۔لاجسٹک کے موجودہ چیلنجزز کے سبب سیریز میں نیوٹرل امپائرز کی تقرری کی شرط کو عارضی طور پر ختم کردیا گیا ہے، لہٰذا آئی سی سی اپنے ایلیٹ اور انٹرنیشنل پینلز میں سے میچ آفیشلز کی تقرری کررہا ہے۔سی ای سی نے تصدیق کی ہے کہ ان حالات میں کم تجربہ رکھنے والے امپائرز کی تعیناتی کے باعث ہر ٹیم کو میچ کی ہر اننگز کے لیے ایک اضافی ڈی آر ایس رویو دیا جارہا ہے، لہٰذا وائٹ بال کرکٹ میں اب ہر ٹیم کے پاس اننگز میں 2 رویوز لینے کی اجازت ہوگی۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments