نیب ہمیں نہیں چھیڑ سکتا اگر چھیڑا تو منہ کی کھانی پڑے گی ، فضل الرحمان

یہ جو ہم پر مسلط کیے گئے ان کی کوئی حیثیت نہیں ہے ، اب معیشت کو چلانا چیلنج بن چکا ہے ۔ سربراہ پی ڈی ایم

Sajid Ali ساجد علی اتوار 28 نومبر 2021 10:57

نیب ہمیں نہیں چھیڑ سکتا اگر چھیڑا تو منہ کی کھانی پڑے گی ، فضل الرحمان
لاڑکانہ ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 28 نومبر 2021ء ) پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ نیب ہمیں نہیں چھیڑ سکتا اگر چھیڑا تو منہ کی کھانی پڑے گی ۔ تفصیلات کے مطابق لاڑکانہ میں کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملکی معیشت کا بیڑا غرق کردیا گیا چیلنج یہ ہے کہ کون معاملات ٹھیک کرے گا ، یہ جو ہم پر مسلط کیے گئے ان کی کوئی حیثیت نہیں ہے ، ایک کروڑ نوکریوں کا کہہ کر نوجوانوں کے ساتھ دھوکہ کیا گیا ، اب معیشت کو چلانا چیلنج بن چکا ہے۔

پی ڈی ایم سربراہ نے کہا کہ آج پارلیمنٹ یرغمال ہے، جس کے ذریعے حکومت الیکشن میں دھاندلی کے لیے قانون سازی کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم فاتح ہیں حکمران شکست زدہ ہیں ، ہم نے اسلام اور شریعت کو شناخت دینی ہے ، نیب ہمیں نہیں چھیڑ سکتا اگر نیب نے چھیڑا تو اسے منہ کی کھانی پڑے گی۔

(جاری ہے)

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ پاکستان دنیا کے نقشے پر ریاست کی شکل رکھتا ہے، لیکن آج پاکستان کی آزادی چھینی جارہی ہے ، سندھ اور بلوچستان کے جزائر کے ملک وہاں کے لوگ ہیں، ہر صوبے کے لوگ اپنے وسائل کے مالک ہیں ۔

دوسری جانب پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) وفاقی دارالحکومت تک لانگ مارچ لے جاتے ہوئے اپنی احتجاجی تحریک دوبارہ شروع کرنے پر عدم فیصلہ اور تذبذب کا شکار ہے ، میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا کہ پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان اس بار ای فیصلہ کن حملہ چاہتے ہیں لیکن ان کے دیگر ساتھی ان کے اس خیال سے قطعی متاثر نہیں ہیں جس نے مولانا فضل الرحمان کو مایوس کر دیا ہے، مسلم لیگ ن بھی اُمید باندھے بیٹھی ہے کہ شاید ملک میں ابھرتی ہوئی صورتحال پی ڈی ایم کے لیے فائدہ مند ہو سکتی ہے یہی وجہ ہے کہ مولانا فضل الرحمان نے پی ڈی ایم کی سربراہی چھوڑنے پر بھی غور شروع کر دیا ہے ، مولانا فضل الرحمان اس بات پر خاصے عرصے سے رنجیدہ ہیں کہ پہلے بھی جب اتحاد میں 11 جماعتیں شامل تھیں اور اب صرف 9 جماعتیں ہیں

لاڑکانہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments