اُردو پوائنٹ پاکستان لاڑکانہلاڑکانہ کی خبریںلاڑکانہ میں بے روزگاری کی سبب خودکو آگ لگانے والے نوجوان محمد علی ..

لاڑکانہ میں بے روزگاری کی سبب خودکو آگ لگانے والے نوجوان محمد علی شیخ سے اظہار یکجہتی کے سلسلے میں احتجاجی مظاہرہ

سکھر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جنوری2018ء)لاڑکانہ میں بے روزگاری کی سبب خودکو آگ لگانے والے نوجوان محمد علی شیخ سے اظہار یکجہتی کے سلسلے میں سکھر شہری اتحاد اور سول سوسائٹی کی جانب سے گھنٹہ گھر چوک پر سندھ حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا مظاہرین کی جانب سے اس موقع پرصوبائی وزیر داخلہ سہیل انور سیال کی تصویر بھی نذر آتش کی گئی مظاہرے کی قیادت مولانا عبید اللہ بھٹو ابن آزاد ، مفتی محمد اعظم مہر ، اشفاق بھٹی ، مولانا عبدالحق مہر ، حبیب اللہ انصاری و دیگر کر رہے تھے اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت تعلیم یافتہ نوجوان کو نوکریاں فراہم نہیں کر رہی ہے جس کی وجہ سے سندھ میں خودسوزی کی چرح میں اضافہ ہو رہا ہے لاڑکانہ پی پی کا گڑھ ہے لیکن لاڑکانہ میں میرٹ کی دھجیاں بکھری جا رہی ہے جو انتہائی ظالمانہ اقدام ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے سندھ حکومت اور وزیر داخلہ کی عدم توجہی کے باعث لاڑکانہ کے نوجوان محمد علی شیخ نے بے روزگاری سے تنگ آکر خود کو آگ لگا دی سندھ حکومت اتنی بے حس ہو گئی ہے کہ انہیٰں غریب عوام کا کوئی خیال نہیں مظاہرین نے چیف جسٹس آف پاکستان چیئرمین پی پی بلاول بھٹو و دیگر سے مطالبہ کیا ہے خودسوزی کی کوشش کرنے والے نوجوان کو انصاف فراہم کیا جائے اوراس کی مالی امداد کا اعلان کیا جائے ۔

#

اپنی رائے کا اظہار کریں -

لاڑکانہ شہر کی مزید خبریں