امریکہ میں متعین چینی و روسی سفرا کی امریکہ کی نام نہاد ’’ سمٹ فار ڈیموکریسی ‘‘کی بھرپور مخالفت

تصادم اور محاذ آرائی کو ہوا دینے کے سلسلے کو بند کرنے کا مطالبہ، سفرا کا مشتر کہ مضمون میں اظہار خیال

اتوار 28 نومبر 2021 16:40

نیو یا رک(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 28 نومبر2021ء) امریکہ میں چین کے سفیر چھن گانگ اور روس کے سفیر اے اینٹونوف نے ’’تمام ممالک کے عوام کے جمہوری حقوق کا احترام کرنا‘‘کے عنوان سے ایک مشترکہ مضمون تحریر کیا ، جس میں امریکہ کی طرف سے منعقد کی جانے والی نام نہاد ’’سمٹ فار ڈیموکریسی‘‘کو سرد جنگ کے نظریات سے لبریز قرار دیتے ہوئے اس کی شدید مخالفت کی گئی ہے۔

مضمون میں ’’اقدار کی سفارت کاری‘‘کی آڑ میں تصادم اور محاذ آرائی کو ہوا دینے کے سلسلے کو بند کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے اور تمام ممالک پر زور دیا گیا ہے کہ وہ باہمی احترام، تعاون اور مشترکہ مفادات پر مبنی بین الاقوامی تعلقات کے تصور پر عمل کریں ،مختلف سماجی نظاموں، مختلف نظریات، مختلف ثقافتوں اور ترقی کی مختلف منازل پر ممالک کے درمیان ہم آہنگی کو فروغ دیں۔

(جاری ہے)

جمہوریت کسی ایک ملک یا چند ممالک کی ملکیت نہیں ہے بلکہ تمام ممالک کے عوام کا حق ہے۔امن، ترقی، انصاف، جمہوریت اور آزادی تمام بنی نوع انسان کی مشترکہ اقدار ہیں۔ جمہوریت کا جائزہ لینے کے لیے سب سے بنیادی معیار یہ ہے کہ کیا عوام کو ملک کی حکمرانی میں وسیع پیمانے پر حصہ لینے کا حق حاصل ہی کیا عوام کے مطالبات کو پورا کیا جا تا ہی اور کیا عوام کو احساسِ اطمینان و کامیابی حاصل ہی مضمون میں واضح الفاظ میں بیان کیا گیا ہے کہ جمہوریت کو نہ صرف ملکی طرز حکمرانی بلکہ بین الاقوامی تعلقات میں بھی جھلکنا چاہیے،حقیقی جمہوری جذبے کی حامل حکومت ایسی نہیں ہوتی جو ملک میں’’جمہوریت‘‘کی وکالت کرے اور دنیا میں اس کے بالکل برعکس بالادستی کو فروغ دے، ملک میں ’’اتحاد‘‘ کا مطالبہ کرے اور دنیا میں تفرقہ پیدا کرے،عالمی امور میں مختلف ممالک کو بین الاقوامی تعلقات میں جمہوری طرزِ عمل کی حمایت کرنی چاہیئے۔

ایسے حالات میں کہ جب عالمی برادری کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے، تمام ممالک کو انسانی ترقی کیفروغ کی خاطر ہم آہنگی اور تعاون کو مضبوط کرنے کی فوری ضرورت ہے۔

مری شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments