اے این پی نے افراسیاب خٹک اور بشری ٰگوہر کی پارٹی رکنیت معطل کر دی

دونوں رہنماؤں کو پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کے حوالے سے بار ہا تاکید کی گئی تھی سات یوم پہلے شوکاز نوٹسز جاری کئے گئے جس پر وہ پارٹی کو مطمئن نہیں کر سکے

پیر نومبر 18:40

پشاور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 نومبر2018ء) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے پارٹی مخالف سرگرمیوں میں ملوث ہونے ، کارکنوں میں انتشار پیدا کرنے اور پارٹی کو نقصان پہنچانے پر اے این پی کے سینئر رہنما افراسیاب خٹک اور مرکزی نائب صدر بشری گوہر کی پارٹی رکنیت معطل کر دی ہے،جبکہ پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے ان کی رکنیت معطلی کا نوٹیفیکیشن اے این پی سیکرٹریٹ باچا خان مرکز سے جاری کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

قبل ازیں افراسیاب خٹک اور بشری گوہر کی طرف سے شوکاز نوٹس کا تفصیلی جواب پارٹی سیکرٹریٹ کو موصول ہوا جس میں دونوں نے انہی نکات کی وضاحت کی جو وہ مرکزی کونسل میں بیان کر چکے تھے اور انہی نکات کا ذکر وہ وقتاً فوقتاً پارٹی فورمز پر کرتے چلے آ رہے تھے اور کئی بار مشاورتی کمیٹی میں بھی اس کا ذکر کیا گیاتھا ،انہوں نے پارٹی سے شوکاز نوٹس کے حوالے سے یہ جاننے کی کوشش کی کہ وہ کونسے نکات ہیں جن پر انہیں شوکاز نوٹس جاری کئے گئے حالانکہ انہی نکات پر مرکزی قائدین بار ہا انہی فورمز پر وضاحت کر چکے ہیں اور انہیں پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کے بارے میں تاکید بھی کی گئی تھی اس کے باوجود انہوں نے سوشل میڈیا کے ذریعے اپنی سرگرمیاں جاری رکھیں جس سے کارکنوں کے ذہنوں میں انتشار پیدا کیا گیا ، ان کے جواب سے پارٹی قطعاً مطمئن نہیں لہٰذا مرکزی صدر نے پارٹی آئین کے صفحہ نمبر گیارہ ،آٹھویں باب اور شق نمبر 2کے تحت اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے ان کی بنیادی رکنیت معطل کر دی۔

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments