وفاقی وزیر اطلاعات کا اطلاع سیل محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کا دورہ

معاون خصوصی اطلاعات و اعلی تعلیم کامران بنگش کا وفاقی وزیر اطلاعات کو محکمے بارے بریفنگ محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ خیبر پختون خوا کا اطلاعات کا مربوط نظام قابل تعریف ہے، شبلی فراز

پیر اکتوبر 20:16

وفاقی وزیر اطلاعات کا اطلاع سیل محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کا دورہ
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 19 اکتوبر2020ء) وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا ہے کہ محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ خیبرپختونخوا کا اطلاعات کا مربوط نظام قابل تعریف ہے۔ محکمے میں اصلاحاتی ایجنڈے اور شفافیت یقینی بنانے کے لئے اشتہارات کے آن لائن سسٹم کومتعارف کرنا بڑی کامیابی اور موجودہ حکومت کی ڈیجٹلائزیشن پالیسی کی تکمیل کی جانب اہم قدم ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ خیبر پختون خوا کے اطلاع سیل کے دورے کے موقع پر کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات ارشد خان اور ڈائریکٹر جنرل امداداللہ بھی موجود تھے۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلی تعلیم کامران بنگش نے وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کو محکمے کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ محکمہ اطلاعات خیبر پختونخوا کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے لئے عملی اقدامات جاری ہیں۔

(جاری ہے)

عوام کو حکومتی اقدامات و اصلاحات کے بارے میں آگاہ رکھنے اور منفی پروپیگنڈہ زائل کرنے کے لئے اطلاعات کا مربوط نظام موثر انداز میں اپنی ذمہ داریاں نبھارہی ہے۔ کامران بنگش نے مزید بتایا کہ محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ خیبر پختون خوا پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے علاوہ ڈیجیٹل میڈیا کے پلیٹ فارم سے بھی تصدیق شدہ خبروں کی ترویج اور بے بنیاد پروپیگنڈوں کی روک تھام میں اہم کردار ادا کرر ہا ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے محکمہ اطلاعات کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ دور میں محکمہ اطلاعات کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے بے بنیاد پروپیگنڈوں اور جھوٹ پر مبنی خبروں کے پھیلاو کی روک تھام کے لئے محکمہ اطلاعات پر بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہے۔ محکمہ اطلاعات عوام اور حکومت کے درمیان ایک پل کا کردار ادا کرتا ہے اس لئے عوام کو بروقت اور صحیح خبریں پہنچانا محمکہ اطلاعات کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ کارکردگی مزید موثر بنانے کے لئے اطلاعات کے وفاقی اور صوبائی محکمے ایک دوسرے کے تجربات سے استفادہ کرسکتے ہیں۔

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments