عوامی ورکرز پارٹی کے رہنما بابا جان 9 برس بعد جیل سے رہا

رہائی وادی ہنزہ میں اکتوبر کے ماہ میں 7 روزہ دھرنے کے بعد ہونے والے مذاکرات کا نتیجہ ہے، اہل خانہ

ہفتہ نومبر 15:07

عوامی ورکرز پارٹی کے رہنما بابا جان 9 برس بعد جیل سے رہا
پشاور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 28 نومبر2020ء) عوامی ورکرز پارٹی کے رہنما بابا جان سمیت دیگر ساتھیوں کی سزائیں معطل کر دی گئیں جس کے مطابق انہیں 9 برس بعد جیل سے رہا کر دیا گیا ۔تفصیلات کے مطابق عوامی ورکرز پارٹی کے رہنما بابا جان کے ساتھ رہا ہونے والوں میں ان کے دو ساتھی افتخار کربلائی اور شکراللّہ بیگ عرف مٹھو بھی شامل ہیں۔

بابا جان کے اہلِ خانہ کا کہنا ہے کہ یہ رہائی وادی ہنزہ میں اکتوبر کے ماہ میں 7 روزہ دھرنے کے بعد ہونے والے مذاکرات کا نتیجہ ہے۔اہلِ خانہ نے کہا کہ نگران حکومت نے 14 سیاسی کارکنوں کی 30 نومبر سے پہلے رہائی کی یقین دہانی کرائی تھی جس کے بعد دھرنا ختم کیا گیاجیل سے رہائی کے بعد بابا جان اور ان کے 2 ساتھی ہنزہ میں اپنے گھر پہنچے جہاں پارٹی رہنمائوں اور کارکنوں نے اٴْن کا استقبال کیا۔

(جاری ہے)

اہل خانہ کے مطابق تمام 14 قیدیوں کی رہائی مرحلہ وار عمل میں آئی ہے۔واضح رہے کہ بابا جان اور دیگر سیاسی رہنمائوں کو 2011ء میں عطاء آباد جھیل کے متاثرین کے احتجاج کے دوران ہنگامہ آرائی کے الزامات میں گرفتار کیا گیا تھا۔عدالت نے گرفتار ہونے والے افراد کو 40 سال سے 90 سال تک کی قیدِ بامشقت کی سزائیں سنائی تھیں۔سزائوں کے خلاف ملزمان نے نظرِثانی کی اپیل دائر کی تھی جس کے بعد عدالت نے ملزمان کو رہا کرنے کا حکم دیا۔

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments