خیبرپختونخوا کے وزیر قانون وپارلیمانی امور اور انسانی حقوق کی کھلی کچری

عوام کو ریلیف دیں اور کسی بھی قسم کی کوتاہی کی صورت میں قانونی کارروائی کی جائے ، افسران کو ہدایت

جمعہ ستمبر 19:57

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 20 ستمبر2019ء) خیبرپختونخوا کے وزیر قانون وپارلیمانی امور اور انسانی حقوق سلطان محمد خان نے تمام محکموں کے افسران کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ وہ عوام کو ریلیف دیں اورکسی بھی قسم کی کوتاہی کی صورت میں قانونی کاروائی کی جائے گی یہ ہدایت انہوں نے ضلع چارسدہ کے ڈیڈک چیئرمین کے دفتر میں جمعہ کے روز منعقدہ کھلی کچہری کے دوران دی۔

(جاری ہے)

اس موقع پررکن صوبائی اسمبلی وڈیڈک چیئرمین خالدخان مہمند، ڈپٹی کمشنر، ڈی پی او اور دیگر محکموں کے افسران بھی موجود تھے کھلی کچہری کے دوران عوام نے،جس میں بوڑھے، جوان اورخواتین شامل تھے، نے کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا وزیر موصوف نے ان کے مسائل توجہ سے سنے اورموقع پر متعلقہ محکموں کے افسران کو احکامات جاری کئے اور جلد از جلد ان کے جائز مسائل حل کرنے کی ہدایت کی اور کہا کی مسائل حل نہ ہونے کی دوبارہ شکایت کی صورت میں قانونی کاروائی کی جائے گی کھلی کچہری کے بعد وزیر قانون نے میڈیا کو بریفنگ دی اور کہا کہ الیکشن کے دوران ہم نے عوام سے وعدہ کیا تھا کہ امن وامان کی صورتحال بہتر بنائیں گے اور عوام کو سہولت دیں گے انشاء اللہ ہم چارسدہ کو ماڈل ضلع بنا کر عوام کے امنگوں پر پورا اتریں گے انہوں نے کہا کہ چار سدہ کے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال کی اپ گریڈیشن اور میڈیکل کالج کے قیام کی منظوری ہوچکی ہے اور بہت جلد اس پر عملی کام شروع ہوگا اس کے علاوہ ضلع چارسدہ میں دو سو کلومیٹر سڑکو سمیت چارسدہ بازار کے فلائی اور پر اسی سال کام شروع ہوگا مہمند ڈیم کے رائلٹی اور بھرتیوں کے حوالے سے سوال پر وزیر قانون نے کہا کہ ریئلٹی صوبے کو ہی ملے گی اور علاقے کے لوگوں کو بھی بھرتی کیا جائے گاوزیر قانون نے ڈی پی او چارسدہ کا عمر زئی میں تین بھائیوں کے قتل کے ملزموں کی بھر وقت گرفتاری کے کوششوں کو سراہااور کہاکہ ھم نے ڈی پی او کو واضح ھدایت دی ہے کہ ضلع میں جرائم کی روک تھام یقینی بنائے وزیر قانون نے اس موقع پر یہ بھی کہا وزیراعظم عمران خان کے وڑن کیمطابق پاکستان کو ایک فلاحی مملکت بنائیںگے جہاں اور انصاف کا بول بالا ہوگا۔

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments