صوبائی حکومت نے فصلوں اور پھلوں کی جدید اقسام کے تخم متعارف کرائے ہیں، صوبائی وزیر زراعت محب اللہ خان

بدھ دسمبر 23:42

پشاور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 02 دسمبر2020ء) خیبر پختونخوا کے وزیر زراعت و لائیو سٹاک محب اللہ خان نے کہا ہے کہ شعبہ زراعت کو ترقی دینے اور فصلوں، پھلوں اور سبزیوں کی پیداوار میں اضافہ کے لئے حکومت ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھا رہی ہے اور صوبائی حکومت نے اس سلسلے میں مختلف پھلوں اور سبزیوں سمیت تمام فصلوں کے ترقی دادہ بیج متعارف کروائے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں زرعی تحقیق سے متعلق ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ایڈوائزر برائے گرین سیکٹر ثنااللہ خان، سیکرٹری زراعت ڈاکٹر محمد اسرار، ڈی جی ذرا عت ریسرچ ڈاکٹر عبدالرف، ڈی جی واٹر مینجمنٹ جاوید اقبال، ماہرین زراعت اور دیگر افسران موجود تھے۔ اجلاس میں ڈائریکٹر جنرل ریسرچ ڈاکٹر عبدالرف نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ صو بے خاص طور پر سوات میں سبزیوں اور پھلوں کو ہر قسم کے مو ذی حشرات سے محفوظ رکھنے، زراعت کی پیداوار میں اضافہ سے متعلق اٹھا ئے گئے اقدامات اور تجربات، نئے اقسام کے تخم کے حصول، مو سمیاتی تبدیلیوں کے نقصانات کو کم کرنے، فرسودہ طریقوں کو ختم کرنے اور جدید ٹیکنالوجی کو فروغ دینے، پانی کی کمی کو پورا کرنے، پھلوں کے ضیاع کو روکنے کے لئے سوات میں انڈسٹری کے قیام کے متعلق اٹھائے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید بتایا کہ پاکستان کی سطح پر پھلو ںکی 61 اقسام ہیں جن میں سے 42 ہمارے صوبے میں بھی ہیں ان میں زیادہ تر پھل سوات میں پیدا ہوتے ہیں۔ انہوں نے ڈیرہ اسماعیل خان میں پیدا ہونے والے آم کی پیداوار کو بہتر بنانے سے متعلق پیش رفت کے حوالے سے بھی وزیرازراعت کو آگاہ کیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر نے بریفنگ میں گہری دلچسپی کا اظہار کرتے ہوئے ہدایت کی کہ ہماری معیشت کا دارومدار زراعت پر ہے جس کیلئے جدید طریقوں پر عمل درآمد ناگزیر ہو چکا ہے۔

انہوں نے تخم کی اقسام کی فروغ کے حوالے سے ماہرین اور محکمہ کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کو سراہتے ہوئے تاکید کی کہ فصلوں کی پیداوار میں اضافے کے ساتھ ساتھ پھلوں اور سبزیوں کو بیماریوں سے محفوظ بنانے کی خاطر بہتر سے بہتر حکمت عملی پر کام کیا جائے تاکہ ہمارا صوبہ اس ضمن میں خوشحال ہوسکے۔

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments